.

وزیر اعظم عمران خان نے پہلی پانچ سالہ قومی سلامتی پالیسی کا اعلان کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

وزیراعظم عمران خان نے پہلی پنج سالہ قومی سلامتی پالیسی کا اجراء کرتے ہوئے کہا کہ ملکی سلامتی کا انحصار شہریوں کی سلامتی میں مضمر ہے۔

جمعہ کے روز وزیراعظم آفس ہونے والی ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ قومی سلامتی پالیسی ان کی حکومت کی اولین ترجیح تھی۔ تقریب میں وفاقی وزراء ، قومی سلامتی کے مشیر ، ارکان پارلیمنٹ ، چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی ، تمام سروسز چیفس ، سینئر سول و فوجی حکام ، ماہرین ، تھنک ٹینکس ، میڈیا اور سول سوسائٹی سے تعلق رکھنے والے افراد نے شرکت کی ۔

وزیراعظم عمر ان خان نے اپنے خطاب میں اپنی حکومت کے قومی سلامتی پالیسی کی تشکیل کے کامیاب اقدام کو اجاگر کیا ۔وزیراعظم نے یہ ہدف حاصل کرنے پر قومی سلامتی کے مشیر اور ان کی ٹیم کو مبارکباد دی ۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ کسی بھی قومی سلامتی پالیسی میں قومی ہم آہنگی اور لوگوں کی خوشحالی کو شامل کیا جانا چاہئے جبکہ بلاامتیاز بنیادی حقوق اور سماجی انصاف کی ضمانت ہونی چاہئے ۔ انہوں نے کہاکہ اپنے شہریوں کی وسیع صلاحیتوں سے استفادہ کے لئے خدمات پر مبنی اچھے نظم و نسق کو فروغ دینا ضروری ہے ۔

اس موقع پر قومی سلامتی کے مشیر ڈاکٹر معید یوسف نے اظہار خیال کرتے ہوئے قومی سلامتی پالیسی کا وژن تفصیل سے بیان کیا ۔ ڈاکٹر معید کے مطابق قومی سلامتی پالیسی میں معاشی سلامتی ، جیوسٹریٹجک اور جیو پولیٹیکل پہلوئوں کا محور ہے جس میں پاکستان کی سلامتی کا استحکام اور دنیا میں مقام حاصل کرنا نمایاں خصوصیات ہیں ۔

مقبول خبریں اہم خبریں