چھے دنوں میں انتخابات کا اعلان، اسمبلیاں تحلیل کی جائیں: عمران خان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے حکومت کو اسمبلیاں تحلیل کرنے اور انتخابات کے اعلان کیلئے 6 روز کی مہلت دے دی۔

عمران خان کی قیادت میں گذشتہ روز صوابی سے شروع ہونے والا ’’آزادی لانگ مارچ‘‘ جمعرات کی صبح اسلام آباد میں ڈی چوک کے قریب پہنچا، جہاں جناح ایونیو پر کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا ’’کہ امپورٹڈ حکومت کو پیغام ہے کہ 6 روز میں انتخابات کا اعلان کریں۔ چھے روز میں فیصلہ نہ کیا تو ساری قوم کو لے کر واپس اسلام آباد آوں گا۔‘‘

کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا ’’کہ میں آپ کی ہمت کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں۔ میں 20 گھنٹے میں خیبرپختونخوا سے اسلام آباد پہنچا ہوں۔ میں نے دیکھا کہ میری قوم نے اپنے خوف پر قابو پا لیا ہے۔‘‘ انہوں نے کہا ‘‘کہ فیصلہ کیا تھا کہ یہاں بیٹھوں گا جب تک الیکشن کی تاریخ نہیں دیتے اور اسمبلی ختم نہیں کرتے لیکن گذشتہ 24 گھنٹے میں جو حالات دیکھے ہیں یہ ملک کو انتشار کی طرف لے کر جا رہے ہیں۔ اگر میں یہاں بیٹھ جاں تو یہ خوش ہوں گے اور ہماری فوج، پولیس سے لڑائی کروائیں گے۔‘‘

انہوں نے کارکنوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا ’’کہ ہمیں خوفزدہ کیا جاتا ہے کہ جب تک امریکہ نہ چاہے کوئی اقتدار میں نہیں آسکتا۔ سارے راستوں میں میں نے ہر طرح کے لوگ دیکھے، نوجوان، ضعیف، پڑھے لکھے ہر طرح کے لوگوں کو دیکھا، ہمیں ممی ڈیڈی پارٹی کہتے تھے، جس طرح آنسو گیس اور شیلنگ سے مقابلہ کیا سب نے دیکھا، آزادی تحریک کو ناکام کرنے کے لئے ہر طرح کے حربے استعمال کئے۔ قوم حقیقی آزادی کے لئے ہر طرح کی قربانی دینے کو تیار ہے۔

تمام لوگ متفق ہیں کہ ہم اس امپورٹڈ حکومت کو تسلیم نہیں کریں گے۔ امریکی سازش کے تحت امپورٹڈ حکومت ہم پر مسلط کیا ہے۔ قوم مجرموں کو اس ملک میں حکومت کرنے نہیں دے گی۔

عمران خان نے کہا کہ سپریم کورٹ کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں۔ کس ملک میں ایسا ہوتا ہے کہ پر امن احتجاج والوں پر آنسو گیس پھینکی جائے۔ اٹک اور راوی پل پر ہمارے دو کارکنوں کو شہید کیا گیا۔ کراچی میں تین کارکنوں کو شہید کیا گیا۔سپریم کورٹ سے انصاف چاہتا ہوں۔

سابق وزیراعظم نے لانگ مارچ ختم کرنے کا اعلان کرتے ہوئے حکومت کو الیکشن کے لیے 6 دن کا الٹی میٹم دے دیا اور کہا کہ اگر 6 روز میں الیکشن کا اعلان اور اسمبلیاں تحلیل نہ کی گئیں تو دوبارہ اسلام آباد آؤں گا۔ اگر انتخابات کا اعلان نہیں کیا تو 30 لاکھ لوگوں کے ساتھ اسلام آباد آؤں گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں