'سر تھوڑا اسلامک ٹچ بھی دیں' قاسم سوری کی عمران خان کو تجویز موضوعِ بحث

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان اور سابق ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی قاسم سوری کی گفتگو کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئی۔

سوشل میڈیا پر لانگ مارچ کی ایک ویڈیو وائرل ہو رہی ہے جس میں قاسم سوری کو عمران خان کے کان میں کچھ کہتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے جو مائیک کی بدولت عوام نے بھی سن لیا۔

یہ ویڈیو اسلام آباد میں عمران خان کے عوام سے خطاب کے دوران بنائی گئی جس میں قاسم سوری نے چیئرمین پی ٹی آئی کے کان میں کہا کہ ’خان صاحب! تھوڑا اسلامی ٹچ دیں، حضور اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی مثالیں دے دیں۔‘

عمران خان نے کچھ دیر سوچ کر اپنا خطاب ان الفاظ میں شروع کیا کہ ’میں وہ ہوں جو خود کو عاشق رسول ﷺ کہتا ہوں۔‘

عمران خان کی اس ویڈیو پر صارفین مختلف آرا کا اظہار کر رہے ہیں۔

ٹوئٹر صارف اور کالم نگار علی معین نوازش نے عمران خان کی ویڈیو شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ سیاست کے لیے مذہب کا شرمناک استحصال!

انہیں کے ٹوئٹ پر تبصرہ کرتے ہوئے ٹوئٹر صارف صائمہ صدیقی نے لکھا کہ ''اس میں کیا غلط ہے، ہر چیز اسلام سے جڑی ہوئی ہے۔'' ان کے بقول ''اسلام میں احتجاج جائز ہے۔''

بابر انصاری نامی ایک صارف نے اس ویڈیو پر ٹوئٹ کیا کہ وہ حکومت سے درخواست کریں گے کہ قاسم خان سوری کو تھوڑا 'آرٹیکل چھ' کا آئینی ٹچ دیں۔

ٹوئٹر پر سید زین رضا نے عمران خان کی ویڈیو کلپ شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ عمران خان کی سیاست کی اس سے بہتر کوئی تعریف نہیں کر سکتا۔

صحافی ندیم ملک نے بھی عمران خان کی ویڈیو شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ ''خان صاحب تھوڑا اسلامک ٹچ تو دیں۔''

ان کے ٹوئٹ پر جواب دیتے ہوئے ساجد منور سولنگی نامی ٹوئٹر صارف نے لکھا کہ اسلامک ٹچ میں آپ کو کیا مسئلہ ہے بھائی؟ کون سے مذہب کا ٹچ دیتا پھر؟

واضح رہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے حکومت کو اسمبلیاں تحلیل کرنے اور انتخابات کے اعلان کیلئے 6 روز کی مہلت دے دی۔

جناح ایونیو اسلام آباد میں کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ الیکشن کا اعلان اور اسمبلیاں تحلیل نہ کی گئیں تو وہ عوام کے ساتھ دوبارہ اسلام آباد آئیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں