آٹھ غیر ملکی سیاحوں کی آمد، اسلام آباد سے خنجراب کا سفر رکشوں پر شروع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

پاکستان کی سیاحت کے لیے آئے ہوئے برطانیہ، اٹلی، کینیڈا اور آسٹریلیا کے آٹھ سیاح رکشوں کے ذریعے خنجراب پہنچیں گے۔ پاکستان کے خوبصورت ترین علاقوں کا نظارہ کرنے کیلئے غیر ملکی سیاحوں نے رکشوں پر سفر کرنے کو ترجیح دی ہے۔

سرکاری خبر رساں ادارے اے پی پی کے مطابق سیاحوں کا آٹھ رکنی گروپ رکشوں کے ذریعے 745 کلومیٹر کا فاصلہ طے کر کے چار روز میں خنجراب پاس پہنچے گا۔

سیاحوں کے گروپ کے ٹیم لیڈر کارنل جولین روہن کے مطابق ’ہماری ٹیم میں چار افراد برطانیہ سے جب کہ ایک آسٹریلیا، ایک کینیڈا، ایک ہالینڈ اور ایک کا تعلق اٹلی سے ہے۔‘ گروپ لیڈر کے مطابق ’ہمیں سفر کی مشکلات اور طوالت کا اندازہ ہے لیکن یہی ایڈونچر ہے۔‘

ماضی میں رکشہ سفر کے شرکا
ماضی میں رکشہ سفر کے شرکا

سنیچر سے سفر شروع کر کے 21 جون کو خنجراب پاس پہنچنے کا منصوبہ رکھنے والے گروپ کے مطابق ’رکشے کے ذریعے وہاں پہنچنا چیلنج ہے لیکن ہم ایسے سفر کرنے کا خاصا تجربہ رکھتے ہیں۔ پاکستان پہنچ کر بھی ہم نے اس کی پریکٹس کی ہے اور ہمیں امید ہے ہم بآسانی پہنچ جائیں گے۔‘

کارنل کولین روہن کے مطابق ’گلگت بلتستان اور خیبر پختونخوا کے سحرانگیز مناظر کا کوئی ثانی نہیں ہے۔ برف سے ڈھکی چوٹیاں اور سورج کو چھوتی وادیاں اس علاقے کو پرفیکٹ سیاحتی مقام بناتی ہیں۔‘

اسلام آباد سے مہم کا آغاز کرنے والے آٹھ غیر ملکی سیاح مختلف علاقوں سے ہوتے ہوئے سات دن میں خنجراب ٹاپ پہنچیں گے۔ تاہم سیاح آیبٹ آباد، ناران، کاغان، بالاکوٹ سمیت دیگر سیاحتی مقامات پر یہ رکیں لوگوں کو ملیں گے۔

سیاح ملک کے خوبصورت علاقوں میں عوامی میزبانی سے لطف اندوز ہوں گے
سیاح ملک کے خوبصورت علاقوں میں عوامی میزبانی سے لطف اندوز ہوں گے

خیال رہے کہ “خنجراب ٹاپ یا خنجراب پاس” پاکستان کا شمالی علاقہ جات سے گلگت کا بارڈر اور سیاحتی چوٹی ہے۔ اہم بات یہ ہے کہ پاکستانی تاریخ میں اس سال سب سے زیادہ سیاح آئے ہیں جبکہ گذشتہ حکومت نے آن لائن ویزہ اور دیگر سیاحوں کیلئے سہولیات فراہم کی ہیں۔ اس مہم کے منتظمین کا کہنا ہے کہ شمالی علاقہ جات میں اس سال ریکارڈ سیاح آئے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ رکشوں کے ذریعے غیر ملکی سیاح پاکستانی خوبصورتی سے لطف اندوز ہونے کے ساتھ ہی ملک کا مثبت امیج دنیا میں اجاگر کریں گے۔ علاوہ ازیں سیاحوں کو خوش آمدید کہنے کیلئے ہزارہ ڈویژن سمیت ملک کے مختلف حصوں میں استقبالی کیمپ بھی لگائے گئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں