صاف شفاف انتخابات نہیں ہوئے تو ملک میں انتشار پھیلے گا: عمران خان

ہم اس وقت تک احتجاج کرتے رہیں گے جب تک صاف اور شفاف الیکشن کی تاریخ نہیں ملتی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ اور سابق وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ صاف شفاف انتخابات نہیں ہوئے تو ملک میں انتشار پھیلے گا۔

’’ہم اس وقت تک احتجاج کرتے رہیں گے جب تک صاف اور شفاف الیکشن کی تاریخ نہیں ملتی۔ امریکی سازش میں یہاں کے میر جعفر میر صادق ملے، بارودی سرنگوں والا پاکستان ہمیں ملا تھا۔ ہم نے آئی ایم ایف کے دباؤ کے باوجود پٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں کم کیں۔‘‘

مہنگائی کے خلاف ملک گیر احتجاجی مظاہروں سے بذریعہ ویڈیو لنک خطاب کرتے ہوئے چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے اعلان کیا کہ شفاف انتخابات نہیں ہوئے تو ملک میں انتشار پھیلے گا۔ صاف اور شفاف الیکشن کے لیے ہم سب مل کر جدوجہد کرتے رہیں گے۔ جدوجہد اور جہاد ہماری بہتری کیلئے ہوتا ہے۔ ظلم کے خلاف جدوجہد کرتے ہیں تو اپنی بہتری کرتے ہیں۔

سابق وزیر اعظم نے کہا کہ ہمارے دور میں پٹرول 12روپے لٹر بڑھا تو مہنگائی مارچ کیا گیا۔ ہم جب اقتدار میں آئے تو اس وقت ملک بہت مشکل میں تھا۔ یہ لوگ پاکستان کو خسارے میں چھوڑ کر گئے تھے۔ ہمارے اقتدار میں آنے کے بعد ہی کرونا آ گیا تھا، جس کے باعث ہمیں مشکل حالات کا سامنا کرنا پڑا۔ مگر ہم نے پھر بھی ملک کی معیشت کو سنبھالا اور اسے آگے کی طرف لے کر گئے۔ بارودی سرنگوں والا پاکستان ہمیں ملا تھا۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ ہم نے پٹرول، ڈیزل کی قیمتیں بڑھانے کے بجائے 10 روپے کم کیں، بجلی فی یونٹ 5 روپے سستی کی، یہ کہتے ہیں عالمی مہنگائی ہے، عالمی مہنگائی تو پچھلی گرمیوں سے ہے، ہم نے آئی ایم ایف کے دباؤ کے باوجود پٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں کم کیں۔ انہوں نے ریکارڈ مہنگائی کر دی۔ امپورٹڈ حکومت ابھی نرخ مزید بڑھائے گی۔ ڈیزل کی قیمتیں بڑھنے سے کسان متاثر ہو گا۔ کسان متاثر ہو گا تو فوڈ سکیورٹی کا مسئلہ ہو گا۔ ہم آئی ایم ایف پروگرام میں رہتے ہوئے ہیلتھ کارڈ دیا۔

عمران خان نے کہا کہ فیٹف سے نکلنے کے لیے سب نے مل کر جدوجہد کی تھی اسی وجہ سے پاکستان فیٹف کے مسئلے کو حل کر پایا ہے۔ اس کے لیے حماد اظہر نے بڑی کوششیں کی ہیں۔ امریکی سازش میں یہاں کے میر جعفر میر صادق ملے۔ نیوٹرلز کو بتایا تھا حکومت کو ہٹایا گیا تو ملک سنبھالا نہیں جائے گا۔

پی ٹی آئی کے زیر اہتمام اسلام آباد میں ایف نائن پارک اور راولپنڈی میں کمرشل مارکیٹ میں احتجاج کیا گیا۔ جب کہ کراچی میں شاہراہ قائدین پر، لاہور میں لبرٹی چوک، فیصل آباد میں گھنٹہ گھر چوک، ملتان میں چوک شاہ عباس اور پشاور میں ہشت نگری میں احتجاج کیا گیا، گوجرانوالہ، کوئٹہ، ٹوبہ ٹیک سنگھ، صادق آباد، دادو، سکھر، سیالکوٹ، جیکب آباد، باجوڑ، سوات، دیر، ہنزہ اور بونیر میں بھی احتجاج کیا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں