.

پِٹرول کی قیمت میں 3.05 روپے فی لیٹرکمی،ڈیزل 8.95 روپے فی لیٹر مہنگا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاکستان کے وزیرخزانہ مفتاح اسماعیل نے اتوارکے روز پِٹرول کی قیمت میں 3.05 روپے فی لیٹر کمی اور ڈیزل کی قیمت میں 8.95 روپے فی لیٹراضافے کا اعلان کیا ہے۔

انھوں نے ایک ٹویٹ میں پِٹرولیم مصنوعات کی نئی قیمتوں کا اعلان کیا ہے اور کہا کہ نئی قیمتیں اتوار اور سوموار کی درمیانی شب بارہ بجے سے نافذالعمل ہوں گی۔

ایک سرکاری اعلامیے کے مطابق دو اور مصنوعات مٹی کے تیل کی قیمت میں 4 روپے 62پیسے فی لیٹراضافہ کیا گیا ہے جبکہ لائٹ ڈیزل آئل (ایل ڈی او) کی قیمت میں صرف 12پیسے فی لیٹر کمی کی گئی ہے۔

یکم اگست سے پِٹرولیم مصنوعات کی مقررہ کردہ نئی قیمتیں یہ ہوں گی: پٹرول 227.19 روپے فی لیٹر، ڈیزل 244.95 روپے، مٹی کا تیل 201.07 روپے اور لائٹ ڈیزل 191.32 روپے فی لیٹر۔

خزانہ ڈویژن کے پریس ریلیز کے مطابق حکومت نے پٹرولیم مصنوعات کی موجودہ قیمتوں پرنظرثانی کرنے کا فیصلہ کیا تھا تاکہ بین الاقوامی مارکیٹ میں خام تیل کی قیمتوں میں ہونے والے اتارچڑھاؤ اور شرح تبادلہ میں تغیّرکے اثرات کو منتقل کیا جاسکے۔

قبل ازیں بعض اعلیٰ سرکاری عہدے داروں نے بتایا تھا کہ یکم اگست سے پٹرولیم کی دونوں بڑی مصنوعات ہائی اسپیڈ ڈیزل (ایچ ایس ڈی) اور پِٹرول کی قیمت میں نمایاں کمی کی جارہی ہے لیکن تین بڑے عوامل یعنی پاکستانی کرنسی کی قدرمیں مسلسل کمی،پِٹرولیم ڈویلپمنٹ لیوی (پی ڈی ایل) کے نفاذ اور ڈیلروں کے کمیشن میں اضافے نے صارفین کو بین الاقوامی سطح پر قیمتوں میں کمی کے فائدے سے محروم کردیا ہے۔

حکام کے مطابق حکومت نے عالمی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کے ساتھ بات چیت کے تحت ہائی اسپیڈ ڈیزل، مٹی کے تیل اور لائٹ ڈیزل پر لیوی کی مد میں 10 روپے فی لیٹر اور پِٹرول پر 5 روپے فی لیٹر اضافے کی پیشگی کارروائی کی تھی تاکہ اگست کے آغازمیں تمام مصنوعات پر یکساں شرح 15 روپے فی لیٹرکے نفاذکو یقینی بنایا جاسکے۔ اس وقت پٹرول پرلیوی 10 روپے فی لیٹراور ایچ ایس ڈی، مٹی کے تیل اور ایل ڈی او پر 5 روپے فی لیٹرکے حساب سے عاید ہے۔

واضح رہے کہ 14 جولائی کو وزیراعظم شہباز شریف نے ایک نشری تقریر میں بین الاقوامی مارکیٹ میں تیل کی قیمتوں میں کمی کے بعد مختلف مصنوعات کی قیمتوں میں 18 روپے سے 40 روپے فی لیٹرتک کمی کا اعلان کیا تھا۔اپریل کے دوسرے ہفتے میں اقتدار میں آنے کے بعد یہ پہلا موقع تھا جب پاکستان مسلم لیگ نوازکی قیادت میں مخلوط حکومت نے پِٹرولیم کی قیمتوں میں کمی کی تھی۔

قبل ازیں26مئی سے یکم جولائی کے درمیان پِٹرول کی قیمت میں 66 فی صد یا 99 روپے فی لیٹراضافہ ہوا تھا جبکہ ایچ ایس ڈی کی قیمت میں 26 مئی سے 92 فی صد یعنی فی لیٹر144.15 روپے کا اضافہ کیا گیا۔اس کی قیمت پہلے 132.39 روپے فی لیٹر تھی۔ اسی طرح مٹی کے تیل کی ایکس ڈپو قیمت 230.26 روپے فی لیٹر تک بڑھ گئی تھی۔اس میں 26 مئی سے یکم جولائی تک 95 فی صد تک اضافہ کیا گیا تھا۔ اسی طرح یکم جولائی کو لائٹ ڈیزل کی ایکس ڈپو قیمت 226.15 روپے تک بڑھ گئی تھی۔اس کی قیمت 26 مئی کو125.56 روپے فی لیٹرتھی۔اس میں 80 فی صد یعنی 100.59 روپے فی لیٹر اضافہ کیاگیا تھا۔

آئی ایم ایف کے ساتھ معاہدے کے تحت حکومت کو رواں مالی سال کے دوران میں 855 ارب روپے جمع کرنے کے لیے تیل کی مصنوعات پر پٹرولیم ترقیاتی لیوی کو بتدریج بڑھا کر زیادہ سے زیادہ 50 روپے فی لیٹرکرنا ہوگا۔

مقبول خبریں اہم خبریں