فیصل آباد: میڈیکل کی طالبہ پربہیمانہ تشدد کرنے والے 6 ملزمان گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

پاکستان کے صوبہ پنجاب کے وسطی ضلع فیصل آباد میں شادی سے مبینہ انکار پر بی ڈی ایس کی طالبہ کے ساتھ انسانیت سوز سلوک کرنے والے مبینہ مرکزی ملزم شیخ دانش سمیت 6 ملزمان کو گرفتار کر لیا۔

سوشل میڈیا پر متاثرہ لڑکی پر تشدد کی ویڈیوز سامنے آ گئیں جن میں اسے بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنانے کے علاوہ جوتیاں چٹوا کر معافی منگوائی جا رہی ہے۔

طالبہ کے اغواء اور تشدد میں ملوث گھریلو ملازمہ سمیت 6 ملزمان کو پولیس نے رات گئے چھاپے مار کر گرفتار کیا تھا۔ گرفتار ملزمان میں شیخ دانش، ماہم، خان محمد، شعیب، فیضان اور اصغر شامل ہیں جنہیں پولیس کی جانب سے بدھ کے روز مقامی عدالت میں پیش کر کے ریمانڈ کی استدعا کرے گی۔

ایف آئی آر کے متن کے مطابق گذشتہ روز شادی سے انکار پر شیخ دانش نے اپنی بیٹی اینا شیخ اور سکیورٹی گارڈ کے ہمراہ سرگودھا روڈ کی رہائشی میڈیکل کی طالبہ کے گھر پر دھاوا بولا اور اسے اغواء کر کے اپنے گھر لے گئے۔

ایف آئی آرکے مطابق طالبہ کو تشدد کا نشانہ بناتے ہوئے سر کے بال اور بھنویں کاٹنے کے علاوہ جوتیاں چاٹتے ہوئے معافی منگوانے پر مجبور کیا گیا اور زیادتی کی کوشش بھی کی۔

پولیس ذرائع کے مطابق گذشتہ رات مرکزی ملزم شیخ دانش کے گھر چھاپے کے دوران پولیس نے 50 سے زائد غیر ملکی شراب کی بوتلیں، اسلحہ اور موبائل فونز بھی قبضہ میں لیے ہیں۔ برآمد ہونے والی شراب اور اسلحہ کا مقدمہ بھی درج کیا جا رہا ہے، اس حوالے سے ملزمان سے مزید تفتیش کی جا رہی ہے۔

اور اس میں شیخ دانش کی بیٹی انا اور بیوی ماہم ابھی تک مفرور ہیں جن کی آواز بھی ویڈیو میں سنی جا سکتی ہے۔‘ پولیس نے واقعے کا مقدمہ ویمن پولیس سٹیشن فیصل آباد میں درج کیا ہے جبکہ تمام ملزمان سے تفتیش جاری ہے۔

سوشل میڈیا پر اس ویڈیو کے حوالے سے شدید ردعمل سامنے آیا ہے۔ سی پی او فیصل آباد عمر سعید کہتے ہیں کہ وہ عوام کے رد عمل سے آگاہ ہیں اور اس کیس کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے۔

فیصل آباد کے مقامی شہری کاشف کے مطابق شیخ دانش کی بیوی ماہم کو جب اس بات پر شک گزرا کہ ان کا خاوند خدیجہ میں دلچسپی لے رہا ہے تو ان کے ایما پر خدیجہ کو اغوا کیا گیا۔ تاہم پولیس نے اس بات کی تصدیق ابھی تک نہیں کی ہے۔

سٹی پولیس چیف عمر سعید کے مطابق ’ابھی تک ہماری تفتیش لڑکی کے بیان کے مطابق ہے جو ان کا الزام ہے۔ پولیس پہلے اس کی تفتیش کرے گی اس کیس میں مزید حقائق آنے پر میڈیا کو آگاہ کی جائے گا۔‘

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں