پاکستان میں سیلاب کی وجہ سے بند ٹرین سروس ایک ماہ بعد بحال کر دی گئی

پاک ایران ریلوے ٹریک مکمل طور پر بحال، زاہدان سے کوئٹہ ٹرینوں کی آمد ورفت شروع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان میں سیلاب کی وجہ سے بند ٹرین سروس ایک ماہ بعد بحال ہو گئی۔

تفصیلات کے مطابق سیلاب کی وجہ سے معطل ہونا والا ٹرین آپریشن ایک ماہ سات دن بعد بحال ہو گیا ہے اور محکمہ ریلوے کی جانب سے ٹرین آپریشن جزوی طو رپر بحال کیا گیا ہے۔ خیبر میل ایکسپریس کراچی سے پشاور اوررحمان بابا ایکسپریس کراچی کینٹ سے راولپنڈی کے لئے بحال ہوئی ہے جب کہ 5 اکتوبر سے قراقرم ایکسپریس کے ساتھ کراچی ایکسپریس اور پاک بزنس ایکسپریس کو بھی بحال کیا جائے گا۔ تمام ٹرینوں کو اضافی کوچز کے ساتھ چلایا جائے گا۔

بتایا گیا ہے کہ لاہور اور کراچی کے درمیان چلنے والی ٹرینوں کا اوسط دورانیہ 22 گھنٹے رکھا گیا ہے۔ سفری دورانیے کا جائزہ 30 روز کے بعد دوبارہ لیا جائے گا اور اسے بتدریج کم کیا جائے گا۔ پانچ اکتوبر کو قراقرم ایکسپریس 3 بج کر30 منٹ پر لاہور کے لئے بزنس ایکسپریس 4 بجے اور کراچی ایکسپریس4 بج کر30 منٹ پرلاہور کی جانب روانہ ہو گی۔

محکمے کی جانب سے کراچی سے لاہور اور راولپنڈی کے لئے چلنے والی پانچوں ٹرینوں کی بکنگ کا آغاز بھی کر دیا گیا ہے اور مسافروں کی سہولت کیلئے پانچوں ٹرینوں میں بوگیوں کی تعداد بڑھا کر 19 کردی گئی ہے۔

ادھرپاک ایران ریلوے ٹریک مکمل طور پر بحال ہونے کے بعد زاہدان سے کوئٹہ ٹرینوں کی آمد و رفت کا سلسلہ بھی شروع ہو گیا ہے۔ پاکستان ریلویز حکام کے مطابق کوئٹہ زاہدان ریلوے سیکشن سیلابی صورتحال کے باعث شدید متاثر ہوا تھا جس کا آدھا حصہ اگست میں بحال کیا گیا جبکہ بقیہ حصہ جمعہ کے روز بحال کیا گیا۔ حکام کا کہنا ہے کہ سیلابی صورتحال سے نقصان پہنچنے والے ریلوے ٹریک کے 106 حصوں کی مرمت کی گئی جبکہ احمد وال پل کی مرمت بھی مکمل کی گئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں