اعظم سواتی بلوچستان پولیس کے ہاتھوں گرفتار، راتوں رات کچلاک جیل منتقل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پی ٹی آئی رہنما سینیٹر اعظم سواتی کو کوئٹہ پولیس نے گرفتار کرکے بلوچستان کی کچلاک جیل منتقل کردیا۔

سینیٹر اعظم سواتی کے خلاف بلوچستان اور سندھ میں مقدمات درج ہیں جب کہ راولپنڈی جلسے میں تقریر کے بعد اعظم سواتی کے خلاف کوئٹہ میں مقدمہ درج کیا گیا تھا، جس پر انہیں کوئٹہ پولیس نے گزشتہ شب حراست میں لے لیا۔ ذرائع کے مطابق بلوچستان پولیس اعظم سواتی کو راتوں رات لے کر بلوچستان روانہ ہوگئی۔ انہیں کچلاک جیل میں منتقل کردیا گیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ بلوچستان میں بھی اعظم سواتی کے خلاف متنازع ٹویٹ پر ایف آئی آرز درج ہیں۔ واضح رہے کہ اسلام آباد کی عدالت نے ایف آئی اے کی جانب مزید ریمانڈ درکار نہ ہونے پر گزشتہ روز اعظم سواتی کو جوڈیشل ریمانڈ پر اڈیالہ جیل بھجوا دیا تھا۔

اعظم سواتی کو رات گئے تک اڈیالہ جیل منتقل ہی نہ کیاگیا جب کہ راتوں رات بلوچستان پولیس نے انہیں خاموشی سے گرفتار کرکے اسلام آباد ائرپورٹ سے خصوصی طیارے کے ذریعے بلوچستان اور پھر کچلاک جیل منتقل کردیا ہے۔

قبل ازیں پی ٹی آئی رہنما اعظم سواتی کے خلاف تضحیک آمیز تقریر کرنے پر درج مقدمے کے سلسلے میں کوئٹہ پولیس ان کی گرفتاری کے لیے اسلام آباد پہنچی تھی۔

اداروں کے خلاف تضحیک آمیز تقریر کے کیس میں سینیٹر اعظم سواتی کو کوئٹہ میں درج مقدمے میں بھی گرفتار کرنے کا فیصلہ اچانک سامنے آیا۔سینیٹر اعظم سواتی کی گرفتاری سے قبل اسلام آباد کی مقامی عدالت سے اجازت ضروری ہے جب کہ گزشتہ روز عدالت نے اعظم سواتی کو 14 روز کے لیے جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا تھا۔

دریں اثنا اعظم سواتی کے خاندانی ذرائع کا کہنا ہے کہ ان کی طبیعت گزشتہ شب سے خراب ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں