ازخود نوٹس سماعت؛ ارشد شریف کی میڈیکل رپورٹ غیر تسلی بخش قرار،مقدمے کے اندراج کا حکم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سپریم کورٹ آف پاکستان نے صحافی اور اینکر پرسن ارشد شریف قتل کیس کے از خود نوٹس کی سماعت میں میڈیکل رپورٹ کو غیر تسلی بخش قرار د ے کر قتل کا مقدمہ آج ہی درج کرنے کا حکم دے دیا۔

چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس عمرعطا بندیال کی سربراہی میں 5 رکنی لارجر بینچ نے ارشدشریف قتل کیس کے ازخود نوٹس پر سماعت کی۔ بنچ میں سپریم کورٹ کے جسٹس اعجازالاحسن، جسٹس جمال خان مندوخیل، جسٹس مظاہرعلی اکبر نقوی اور جسٹس محمد علی مظہر شامل ہیں۔

دوران سماعت چیف جسٹس نے ایڈیشنل اٹارنی جنرل سے فیکٹ فائنڈنگ کمیٹی کی رپورٹ کا مطالبہ کیا جس پر انہوں نے عدالت کو یقین دہانی کروائی کہ رپورٹ عدالت میں جمع کروائی جائے گی۔

بنچ نے ارشد شریف کے قتل کی ایف آئی آر آج کی تاریخ میں درج کرنے کا حکم دیتے ہوئے کیس کی مزید سماعت 7 دسمبر تک ملتوی کردی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں