ترکیہ زلزلہ

پاکستان: ریسکیو آپریشن میں حصہ لینے کیلئے حکومتی اور فوجی ٹیمیں ترکیہ روانہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

حکومت پاکستان کی ہدایت پر برادر ملک ترکیہ میں ہولناک زلزلے کے بعد ریسکیو آپریشن میں حصہ لینے کیلئے پاکستانی 1122 کی امدادی ٹیم گزشتہ روز ترکیہ روانہ ہو گئی۔

ترجمان کے مطابق ریسکیو ٹیم کی قیادت ڈی جی ریسکیو ڈاکٹر رضوان نصیر کر رہے ہیں ،51 رکنی اربن سرچ اینڈ ریسکیو ٹیم انٹرنیشنل ریسپانس یونٹ کا حصہ ہے۔

ریسکیو 1122 کے اقوام متحدہ سے سرٹیفائیڈ 51 رکنی امدادی دستے کی لاہور سے روانگی۔ [تصویر بشکریہ @Official_PIA]
ریسکیو 1122 کے اقوام متحدہ سے سرٹیفائیڈ 51 رکنی امدادی دستے کی لاہور سے روانگی۔ [تصویر بشکریہ @Official_PIA]

ترجمان نے کہا کہ ریسکیو ٹیم سرچ، ٹیکنیکل ریسکیو، روپ ریسکیو، میڈیکل ٹیم، کمانڈ سپورٹ، کوارڈینیشن و کمیونیکیشن اور لاجسٹک ٹیم پہ مشتمل اور اقوام متحدہ سے سرٹیفائیڈ ہے۔

پاک فوج کے 2 امدادی دستوں کی روانگی

دریں اثنا آرمی چیف جنرل عاصم منیر کی ہدایت پر پاک فوج کے 2 امدادی دستے ترکیہ روانہ کر دیئے گئے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ [آئی ایس پی آر] کے مطابق امدادی دستے پاک فضائیہ کے خصوصی طیارے سے روانہ ہوئے۔

پاکستان فوج کے امدادی دستے کی راولپنڈی سے روانگی سے قبل تصویر۔ [بشکریہ @ndmapk]

اس دستے میں آرمی ڈاکٹرز، نرسنگ سٹاف اور ٹیکنیشنز شامل ہیں جو کہ 30 بستروں کا موبائل ہسپتال قائم کرے گا۔

آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ دستے پاکستانی سفارت خانے کے ساتھ قریبی رابطہ رکھ کر کام جاری رکھیں گے اور ریلیف کے کاموں کی تکمیل تک دستے وہاں موجود رہیں گے۔ ترجمان پاک فوج کے مطابق امدادی سامان میں خیمے، کمبل اور دیگر امدادی اشیا بھی بھیجی گئی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں