افغانستان وطالبان

افغان طالبان نے پاکستان کے ساتھ اہم تجارتی سرحدی گذرگاہ دوبارہ کھول دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

افغانستان کے حکمران طالبان نے جمعرات کے روز پاکستان کے ساتھ اہم سرحدی گذرگاہ کو دوبارہ کھول دیا ہے اورسرحد کے دونوں اطراف پھنسے ہزاروں ٹرکوں کو چند روز کے بعد خوراک اور دیگر اشیاء آرپار لے جانے کی اجازت مل گئی ہے۔

یہ اہم پیش رفت پاکستان کے وزیردفاع خواجہ محمد آصف کے زیرقیادت اعلیٰ سطح کے وفد کے کابل کے غیرعلانیہ دورے کے ایک روز بعد ہوئی ہے۔وفد نے طالبان کی جانب سے سرحد کی گذشتہ اتوار سے بندش سمیت متعدد امور پر تبادلہ خیال کیا تھا۔ وفدنے طالبان کے سینیر عہدے داروں سے ملاقات کی تھی۔ان میں طالبان کے نائب وزیراعظم برائے اقتصادی امور ملّا عبدالغنی برادربھی شامل ہیں۔

افغانستان کے سرحدی صوبہ ننگرہار میں طالبان کےمقررکردہ حکام نے طورخم سرحد دوبارہ کھولنے کی تصدیق کی ہے۔اسلام آباد میں افغان سفارت خانہ نے بھی ٹویٹر پرطورخم بارڈر دوبارہ کھولنے کی خبر پوسٹ کی۔

پاکستان اورافغانستان کے مشترکہ ایوان صنعت وتجارت کے ڈائریکٹرضیاء الحق سرحدی نے بتایا ہے کہ ہزاروں گاڑیاں جمعرات کو صوبہ خیبرپختونخوا میں واقع درّہ خیبر کے پاس سے گذرنا شروع ہوگئی ہیں۔ان میں بیشتر ٹرکوں پر سبزیاں اور پھل جیسی تازہ اشیاء لدی ہوئی ہیں۔

پاکستان کے لیے طورخم ایک اہم بارڈرکراسنگ اور وسط ایشیائی ممالک تک پہنچ کے لیے واحد تجارتی راستہ ہے۔طورخم کے دوبارہ کھلنے سے دونوں اطراف کے تاجروں اور دیگر افراد کو بھی راحت ملی ہے وہ گذشتہ چاردن سے سرحد پر پھنس کررہ گئے تھے۔یہ نیا اقدام دونوں ہمسایہ ممالک کے درمیان کشیدگی میں کمی کا اشارہ بھی ہے۔

پاکستان کے دفترخارجہ کے مطابق وفد نے بدھ کے دورے میں "خطے میں دہشت گردی کے بڑھتے ہوئے خطرے" پر بھی تبادلہ خیال کیا، خاص طور پر پاکستانی طالبان جنگجوؤں کی دہشت گردی کی حالیہ کارروائیوں کے بارے میں بات چیت کی گئی ہے۔

کالعدم تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) ایک الگ گروپ ہیں، لیکن ان کا اتحاد افغان طالبان سے ہے، جنھوں نے ایک سال سے زیادہ عرصہ قبل امریکی اور نیٹو افواج کے انخلا کے بعد کابل میں اقتدار پر قبضہ کر لیا تھا۔ افغانستان میں طالبان کے قبضے نے ٹی ٹی پی کو حوصلہ دیا، جس کے سرکردہ رہنما اور جنگجو مبیّنہ طورپرجنگ زدہ ملک میں چھپے ہوئے ہیں۔

حالیہ مہینوں میں ٹی ٹی پی نے پاکستان میں حملوں میں اضافہ کردیا ہے جبکہ سکیورٹی فورسز اکثر ان کے خلان ان کے ٹھکانوں پر چھاپاکارروائیاں کرتی رہتی ہیں۔پولیس کے مطابق شمال مغربی ضلع لکی مروت میں تازہ کارروائی میں سکیورٹی فورسز نے جمعرات کو چھے پاکستانی طالبان جنگجوؤں کو ہلاک کر دیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں