بولان میں بلوچستان کانسٹیبلری کی وین پرخودکش حملہ، 8 پولیس اہلکاراورایک شہری شہید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے ضلع کیچ میں کانسٹیبلری کی وین پر خودکش بم حملے میں ایک شہری اور آٹھ پولیس اہلکار شہید ہو گئے ہیں۔

وزیر داخلہ رانا ثناءاللہ کے مطابق دھماکا سوموار کو صبح 10 بجے سبی اور کیچ اضلاع کی سرحد سے متصل علاقے میں کمبری پل پر ہوا۔انھوں نے بتایا کہ پولیس وین کیچ کی تحصیل ڈھاڈر سے کوئٹہ واپس آ رہی تھی۔

بلوچستان کانسٹیبلری صوبائی پولیس فورس کاایک محکمہ ہے اور اس کے اہلکاروں کو اہم تقریبات اور جیلوں سمیت حساس علاقوں میں سکیورٹی ڈیوٹی پر تعینات کیا جاتا ہے۔حملے میں نشانہ بننے والے سکیورٹی اہلکار سبی ثقافتی میلے میں ڈیوٹی کے بعد واپس آرہے تھے۔

پولیس وین کو ایک موٹر سائیکل سے حملے میں نشانہ بنایا گیا تھا۔ اس کو ایک خودکش بمبار چلا رہا تھا۔ اس کے نتیجے میں نو افراد شہید اور 13افراد زخمی ہوئے ہیں۔وزیرداخلہ نے بتایاکہ تین زخمیوں کی حالت تشویش ناک ہے۔ابھی تک کسی تنظیم نے حملےکی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔

انھوں نے بتایا کہ زخمیوں کوفوری طورپر ہیلی کاپٹر کے ذریعے کوئٹہ منتقل کردیاگیا ہے اوروفاقی حکومت شہیدوں کے حوالے سے بلوچستان حکومت کے ساتھ قریبی رابطے میں ہے۔

وزیراعظم شہباز شریف نے بھی دہشت گردی کے واقعے کی مذمت کی اور شہید پولیس اہلکاروں کی بہادری کو خراج عقیدت پیش کیا۔انھوں نے کہا کہ بلوچستان میں دہشت گردی ملک میں عدم استحکام پیدا کرنے کے مذموم عزائم کا حصہ ہے۔انھوں نے ملک کو دہشت گردی کی لعنت سے پاک کرنے کے عزم کا اعادہ کیا ہے۔

وزیراعلیٰ بلوچستان میرعبدالقدوس بزنجو نے حملے کی مذمت کرتے ہوئے ہلاکتوں پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔انھوں نے کہا کہ دہشت گردعناصر بزدلانہ کارروائیوں کے ذریعے اپنے مذموم مقاصد حاصل کرنا چاہتے ہیں، وہ بدامنی اورعدم استحکام پیدا کرکے صوبہ بلوچستان کو پسماندہ رکھنے کی سازش کر رہے ہیں۔انھوں نے کہا کہ عوام کی حمایت سے ایسی تمام سازشوں کو ناکام بنایا جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں