کراچی پولیس آفس حملے کے ماسٹر مائنڈ کو ہلاک کر دیا گیا: سی ٹی ڈی

پولیس کے آپریشن میں دو مبینہ دہشت گرد ہلاک، دیگر دو گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

صوبہ سندھ کے محکمہ انسداد دہشت گردی (سی ٹی ڈی) نے کراچی پولیس آفس پر 17 فروری کو ہونے والے دہشت گرد حملے کے ’ماسٹر مائنڈ‘ کو آپریشن کے دوران ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

سی ٹی ڈی کے ترجمان کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں بتایا گیا کہ کراچی کے علاقے منگھوپیر میں ناردرن بائی پاس کے قریب آپریشن کے دوران حملے کا ماسٹر مائنڈ آریاد اللہ اور اس کا ایک ساتھی مارا گیا۔

بیان کے مطابق ہلاک ہونے والے دوسرے دہشت گرد کی شناخت کی جا رہی ہے۔ آپریشن کے دوران مزید 2 ملزمان کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔ ترجمان کا کہنا تھا کہ علاقے میں سی ٹی ڈی کا سرچ آپریشن جاری ہے۔

ترجمان سی ٹی ڈی نے کہا کہ سندھ کے وزیر اطلاعات شرجیل انعام میمن آج سہ پہر 3 بجے کراچی میں پریس کانفرنس سے خطاب کریں گے اور سی ٹی ڈی مقابلے پر میڈیا نمائندوں کو بریفنگ دیں گے۔

یاد رہے کہ گزشتہ ماہ 17 فروری کو دہشت گردوں نے شاہراہ فیصل پر قائم کراچی پولیس آفس پر حملہ کیا تھا جس کے نتیجے میں پولیس اور رینجرز اہلکاروں سمیت 4 افراد جاں بحق جب کہ 17 زخمی ہوگئے تھے۔

حملے کے دوران دہشتگردوں نے فائرنگ کے ساتھ ساتھ دستی بموں کا بھی استعمال کیا۔ پولیس کے ساتھ فائرنگ کے تبادلے کے دوران ایک دہشت گرد نے خود کو دھماکے سے اڑا لیا تھا۔ چار گھنٹوں بعد فورسز نے آپریشن مکمل کیا اور عمارت کو کلیئر کردیا تھا۔ اس حملے کی ذمہ داری تحریک طالبان پاکستان )ٹی ٹی پی( نے قبول کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں