جوہری اور میزائل پروگرام کا تحفظ ہرچیز پرمقدم ہے:وزیراعظم آفس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

وزیراعظم پاکستان میاں محمد شہباز شریف کے دفتر کی طرف سے ملک کے جوہری اور میزائل پروگرام پر میڈیا میں گردش کرنے والی قیاس آرائیوں کو مسترد کردیا ہے۔ وزیراعظم آفس کا کہنا ہے کہ جوہری پروگرام اور میزائل نظام کا تحفظ ہرچیز پرمقدم ہے اور اس پر کوئی سمجھوتا نہیں کیا جائے گا۔

پاکستان کے جوہری اورمیزائل پروگرام کے حوالے سے حالیہ بیانات، پریس ریلیز،سوالات اور مختلف دعوے سوشل اور پرنٹ میڈیا پر زیر گردش ہیں۔ جس میں عالمی جوہری توانائی ایجنسی کے ڈی جی رافیل ماریانو گروسی کے معمول کے دورہ پاکستان کو بھی منفی رنگ دیا گیا ہے۔

وزیراعظم آفس اپنے بیان میں باور کرایا ہے پاکستان کا جوہری اور میزائل پروگرام قومی اثاثہ ہے جس کی حفاظت ریاست کیلئے ہرچیز پر مقدم ہے ۔ پاکستان کا جوہری پروگرام مکمل طورپرمحفوظ ،فول پروف اور کسی بھی دباؤ کا شکارنہیں ۔ یہ صلاحیت جس مقصد کے لئے حاصل کی گئی وہ پوری ہو رہی ہے۔ پاکستان کے جوہری اور میزائل پروگرام کے حوالے سے میڈیا میں آنے والی تمام قیاس آرائیاں اور افواہیں بے بنیاد ہیں۔

خیال رہے کہ پاکستان میں سوشل، ڈیجیٹل اور پرنٹ میڈیا پرکچھ عرصے سے پاکستان کے جوہری پروگرام کے حوالے سے طرح طرح کی قیاس آرائیاں اور افواہیں گردش کررہی ہیں۔ ان افواہوں میں پاکستان کے جوہری پروگرام کو ’آئی ایم ایف‘ کے ساتھ مذاکرات کے ساتھ جوڑنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے بھی اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ پاکستان کے جوہری اور میزائل پروگرام پر کوئی سمجھوتا نہیں کریں گے۔ انہوں نے دو ٹوک الفاظ میں کہا کہ کسی کو یہ حق نہیں پہنچتا کہ وہ پاکستان کے میزائل پروگرام پر ہمیں ڈکٹیشن دے۔ اس بات کا فیصلہ پاکستان خود کرے گا کہ اس کے میزائلوں کی رینج کتنی ہونی چاہیے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں