’یہ آپ کا مقدمہ نہیں‘سپریم کورٹ نے صدرکی نااہلی سے متعلق شہری کی درخواست خارج کردی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سپریم کورٹ نے صدر عارف علوی کو نا اہل قرار دینے سے متعلق دی گئی درخواست خارج کردی۔

جسٹس اعجاز الاحسن کی سربراہی میں قائم سپریم کورٹ کے دو رکنی بنچ نے ایک شہری ظہور مہدی کی طرف سے صدر عارف علوی کی نا اہلی کے لیے دی گئی درخواست خارج کردی۔

درخواست میں صدر مملکت کو آرٹیکل 62 ون ایف کے تحت نا اہل قرار دینے کی استدعا کی تھی جسے عدالت نے خارج کردیا۔

درخواست گذار کا کہنا ہے کہ صدر عارف علوی کی صدارتی امیدوار نامزدگی کی جانچ پڑتال درست نہیں کی گئی۔ عارف علوی کے کاغذات نامزدگی پرمیرے چھ اعتراضات تھے۔ صدارتی انتخابات کے وقت عارف علوی انڈر ٹرائل ملزم تھے اور صدارت کے لیے اہلیت نہیں رکھتے تھے۔

ظہور مہدی کے مطابق نا اہل شخص کو صدر بنانے کی وجہ سے ملک اس وقت بحران کا شکار ہے اور سیاسی جماعتیں باہم دست وگریباں ہیں۔

اس موقعے پر جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دیئے کہ سیاسی جماعتیں کیا کررہی ہیں، یہ آپ کا مقدمہ نہیں۔ آپ کے کاغذات نامزدگی پر تائید کنندہ اور تجویز کنندہ کے دستخط نہیں تھے۔ تائید کنندہ اور تجویز کنندہ کے کا مجلس شوریٰ کا رکن ہونا ضروری ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں