پولیس کی طرف بڑھنے والا ہاتھ توڑ دیں گے: نگران وزیراعلیٰ پنجاب

گذشتہ 5 سے 7 دنوں میں ہو نیوالے واقعات پر جے آئی ٹی بنانے کا فیصلہ کیا ہے: پریس کانفرنس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

نگران وزیر اعلیٰ پنجاب محسن نقوی نے کہا ہے کہ حکومت اور ریاست کی رٹ قائم کرنا بہت ضروری ہے۔ رٹ آف گورنمنٹ قائم کرنے کے لئے پولیس کو فری ہینڈ دے دیا ہے۔ اگر کوئی ریاست کی رٹ چیلنج کرے گا اور پولیس والوں کی طرف ہاتھ بڑھائے گا تو وہ ہاتھ توڑیں گے۔

لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوںنے کہا کہ یہ نہیں ہو سکتا کہ پولیس مار کھاتی رہے اور ہم چپ کر کے بیٹھ جائیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت اور ریاست کی رٹ قائم کرنا بہت ضروری ہے تاکہ یہ بتایا جا سکے کہ ایک حکومت بھی موجود ہے اور ریاست بھی موجود ہے۔

انہوں نے کہا کہ دو روز پہلے پولیس نے کینال روڈ کلیئر کیا تو چیکنگ کے لیے روڈ بلاک کرنے کی درخواست کی لیکن میں نے انکار کر دیا۔ نگران وزیر اعلی پنجاب کا کہنا تھا کہ پولیس 2 بار عمران خان کے گیٹ پر پہنچنے کے بعد اس لیے واپس لوٹ گئی کیونکہ میں نے انہیں واپس آنے کا کہا تھا۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ آج کے دن تک ہماری یہی کوشش ہے کہ کوئی ایسی چیز نہ ہو جس سے ماحول خراب ہو۔

محسن نقوی نے کہا کہ کینال روڈ کھولنے کے بعد رات کے وقت وہاں سے ایک پولیس اہلکار گزر رہا تھا جسے تشدد کا نشانہ بنایا گیا، اسے وہاں سے فرار ہونا پرا جسے لوگوں نے بچایا، اس کے بعد وہاں سے ایلیٹ فورس کی ایک گاڑی گزر رہی تھی جسے روک کر ہتھیار لوٹ لئے گئے اور گاڑی کو توڑ کر کینال میں پھینک دیا گیا۔

نگران وزیراعلیٰ پنجاب محسن نقوی نے کہا کہ اگر کسی کو آئی جی اور ڈی پی او پر اعتماد نہیں تو پولیس کی سکیورٹی واپس کر دیں، سیاسی سرگرمی کی اجازت ہے، یہ نہیں ہوگا کہ پولیس والوں کو گالیاں دو اور کہو کہ انہیں سکیورٹی بھی دو۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ 5 سے 7 دنوں میں ہونے والے واقعات پر جے آئی ٹی بنانے کا فیصلہ کیا ہے، کسی کو حق نہیں کہ پولیس پر الزامات لگائے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں