یوم پاکستان ملی جوش وجذبے سے منایا جا رہا ہے، قیدیوں سزاؤں میں تخفیف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

قوم آج یوم پاکستان اس عزم کی تجدید کے ساتھ منارہی ہے کہ وطن عزیز کو بابائے قوم قائداعظم محمد علی جناح کے تصور کے مطابق ایک حقیقی اسلامی فلاحی ریاست اور اس کی ترقی خوش حالی اور مضبوط دفاع کو یقینی بنایا جائے گا۔

یہ دن 23مارچ 1940ء کو منظور کی گئی تاریخی قرارداد لاہور کی یادمیں منایاجاتا ہے جس میں برصغیر کے مسلمانوں کے لئے ایک الگ وطن کے قیام کا فیصلہ کیا گیا۔

دن کا آغاز وفاقی دارالحکومت میں اکتیس (31) اور صوبائی دارالحکومتوں میں اکیس اکیس (21) توپوں کی سلامی سے ہوا۔ نماز فجر کے بعد ملک کی ترقی اور خوشحالی کے لئے خصوصی دعائیں مانگی گئیں۔

سرکاری ٹیلی وژن اور ریڈیو اس موقع پر خصوصی پروگرام نشر کریں گے جس میں اس دن کی اہمیت کو اجاگر کیا جائے گا اور تحریک پاکستان کے رہنمائوں اورکارکنوں کو خراج تحسین پیش کیا جائے گا۔

یوم پاکستان کے موقع پر اپنے پیغام میں وزیر اعظم شہباز شریف نے کہاکہ پاکستان سیاسی و آئینی جدوجہد کے نتیجے میں قائم ہوا اور اس کا مستقبل بھی آئین میں مضمر ہے۔

وزیراعظم نے کہاکہ پاکستان ترقی کی عظیم منازل طے کرے گا لیکن اس خواب کو حقیقت میں تبدیل کرنے کے لئے ضروری ہے کہ ہم اپنی صفوں میں اتحاد پیدا کریں قومی مفادات کو ترجیح دیں اور اپنے آبائو اجداد کے ورثے کے تحت جدوجہد کرنے کا پختہ عزم کریں۔

انہوں نے کہاکہ پاکستان کا قیام بیسویں صدی کا ایک یقینی معجزہ تھا۔

وزیراعظم نے کہاکہ بین الاقوامی برادری کے رکن کے طورپر پاکستان نے انسانیت کو درپیش مسائل کے حل اور عالمی امن کے قیام کے لئے ہمیشہ ایک ذمہ دار ریاست کا کردار ادا کیا ہے۔

قیدیوں کی سزا میں تخفیف

صدرڈاکٹر عارف علوی نے یوم پاکستان کے موقع پر قیدیوں کی سزا میں معافی کا اعلان کیا ہے۔اعلان کے تحت مختلف سطح کے قیدیوں کی سزا میں نوے دن کی کمی کی گئی ہے جن میں پینسٹھ سال سے زائد عمر کے مرد، خواتین جن کی عمر ساٹھ سال سے زائد ہے اور اٹھارہ سال سے کم عمر افراد جو اپنی سزا کا ایک تہائی حصہ مکمل کر چکے ہیں۔

تاہم یہ معافی قتل، جاسوسی، ملک دشمن سرگرمیوں، عصمت دری، چوری، ڈکیتی، اغوا، دہشت گردی اور ملکی خزانے کو نقصان پہنچانے کے جرائم میں ملوث قیدیوں کے لیے نہیں ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں