آئین کے تحت عام انتخابات کا ایمانداری اور وقت پر منصفانہ انعقاد ضروری ہے: سپریم کورٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سپریم کورٹ آف پاکستان نے انتخابات ملتوی کرنے کے خلاف پاکستان تحریک انصاف [پی ٹی آئی] کی درخواست پرکل 27 مارچ کی سماعت کا تحریری حکم جاری کر دیا ہے۔

عدالتی حکم نامے میں کہا گیا ہے کہ آئین کے تحت عام انتخابات وقت پر ہونا لازم ہیں۔ بروقت عام انتخابات کا ایمانداری، منصفانہ اور قانون کے مطابق انعقاد جمہوریت کے لئے ضروری ہے، عام انتخابات کے انعقاد میں خامی، کمی یا ناکامی مفاد عامہ اور ووٹنگ کا بنیادی حق متاثر کرتی ہے۔

سپریم کورٹ کے تحریری حکم نامے میں کہا گیا ہے کہ درخواست گذار کے مطابق الیکشن کمیشن نے صدر مملکت کی انتخابات کی تاریخ منسوخ کی، درخواست گذار کے مطابق الیکشن کمیشن صدر کی تاریخ منسوخ کرنے کا اختیار نہیں رکھتا، درخواست گذار کے مطابق الیکشن کمیشن نے انتخابات ملتوی کر کے آرٹیکل 254 کے پیچھے پناہ لی۔

حکم نامے میں مزید کہا گیا ہے کہ عدالتی نظائر میں آرٹیکل 254 کسی عمل کا مقررہ وقت گذرنے کے بعد اس کو غیر مؤثر ہونے سے تحفظ دیتا ہے۔ آرٹیکل 254 مقررہ وقت پر ہونے والے عمل میں التوا کا تحفظ نہیں دیتا۔ درخواست گذار کے مطابق 8 اکتوبر تک انتخابات ملتوی کرنے کی کوئی آئینی پشت پناہی نہیں۔

عدالتی حکم کے مطابق سپریم کورٹ نے تمام فریقین کو نوٹسز جاری کر دیئے، الیکشن کمیشن سے کہا گیا ہے کہ وہ الیکشن کمیشن درخواست میں اٹھائے گئے قانونی سوالات پر جواب دے۔

مقبول خبریں اہم خبریں