وفاقی کابینہ سے منظوری کے بعد رجسٹرار سپریم کورٹ کو ہٹانے کا نوٹیفکیشن جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

رجسٹرار سپریم کورٹ عشرت علی کو ان کے عہدے سے ہٹا دیا گیا۔ عشرت علی کو اسٹیبلشمنٹ ڈویژن رپورٹ کرنے کی ہدایت کر دی گئی۔

تفصیلات کے مطابق عشرت علی پاکستان ایڈمنسٹریٹو سروس کے گریڈ 22 کے افسر ہیں۔ عشرت علی 28 ستمبر 2022 سے رجسٹرار سپریم کورٹ تعینات تھے۔

وفاقی کابینہ نے پیر کی رات ایک خصوصی اجلاس میں سپریم کورٹ رجسٹرار عشرت علی کی خدمات واپس لینے کا اعلان کرتے ہوئے انہیں اسٹیبلشمنٹ ڈویژن رپورٹ کرنے کی ہدایت کر دی۔

سپریم کورٹ کے سینیئر جج جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے سیکریٹری کابینہ سیکریٹریٹ، سیکریٹری اسٹیبلشمنٹ کو خط میں لکھا تھا کہ سپریم کورٹ رجسٹرار کو فوری طور پر واپس بلائیں۔

وزارت اطلاعات کے ایک اعلامیے کے مطابق وزیر اعظم شہباز شریف کی زیر صدارت اجلاس میں دو نکاتی ایجنڈے پر تفصیلی غور کیا گیا۔

وفاقی کابینہ سے عشرت علی کو عہدے سے ہٹانے کی منظوری لی گئی۔ جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے آج رجسٹرار سپریم کورٹ کو عہدہ چھوڑنے کی ہدایت کی تھی۔ اسٹیبلشمنٹ ڈویژن نے عشرت علی کو عہدے سے ہٹانے کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں