باڑہ میں سکیورٹی فورسز کی گاڑی کے قریب بارودی مواد پھٹنے فوجی اہلکاروں کی ہلاکتیں

کالعدم تحریک طالبان پاکستان نے دھماکے کی ذمہ داری قبول کر لی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

خیبر پختونخوا کے ضلع باڑہ میں سیکیورٹی فورسز کی گاڑی کے قریب بارودی موادپھٹنے کے نتیجے میں نائب صوبیدار حضرت گل اور سپاہی نذیر اللہ محسود جاں بحق ہو گئے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر )کے مطابق پاکستان کی سکیورٹی فورسز دہشت گردی کی لعنت کو ختم کرنے کے لیے پرعزم ہیں اور ہمارے فوجیوں کی ایسی قربانیاں ہمارے عزم کو مزید مضبوط کرتی ہیں۔

ادھر کالعدم تنظیم تحریک طالبان پاکستان نے اس دھماکے کی ذمہ داری قبول کر لی۔ تحریک طالبان کے بیان کے مطابق ہفتے کے روز ہونے والے حملے میں آٹھ فوجی اہل کار لقمہ اجل بنے۔

علاوہ ازیں طالبان نے صوابی کے علاقے میں ایک پولیس وین پر گرینیڈ حملے کی بھی ذمہ داری قبول کی اس حملے میں ایک پولیس افسر جاں بحق اور دو زخمی ہو گئے تھے۔

پاکستان میں تحریک طالبان پاکستان کی جانب سے گزشتہ سال نومبر میں جنگ بندی کے خاتمے کے اعلان کے بعد حملوں کی تعداد میں اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے۔ تشدد کی اسی لہر کے سدباب کے لئے حکومت نے قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس میں فیصلہ کیا تھا کہ ملک بھر میں دہشت گردوں کے خلاف جامع آپریشن کیا جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں