وفاقی کابینہ کا الیکشن کمیشن کو فنڈز دینے کا معاملہ پارلیمنٹ میں لے جانے کا فیصلہ

پنجاب میں انتخابات کے معاملے پر وفاقی کابینہ کا اجلاس کل دوبارہ طلب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

پنجاب میں انتخابات سے متعلق سپریم کورٹ کے فیصلے کے پیش نظر الیکشن کمیشن کو فنڈز جاری کرنے کے حوالے سے وفاقی کابینہ کا اجلاس کل دوبارہ طلب کر لیا گیا۔ وفاقی کابینہ نے پنجاب میں انتخابات کے لیے فنڈز کی منظوری کا فیصلہ پارلیمنٹ پر چھوڑ دیا۔

وزیر اعظم شہباز شریف کی زیر صدارت اتوار کو وفاقی کابینہ کا اجلاس دو گھنٹے سے زائد وقت تک جاری رہا۔ وفاقی کابینہ کا یہ اجلاس اسلام آباد کی بجائے لاہور میں منعقد کیا گیا تھا۔

وزیر اعظم نے ویڈیو لنک پر وفاقی کابینہ کے اجلاس کی صدارت کی جبکہ بیش تر کابینہ اراکین بھی ویڈیو لنک پر ہی اجلاس میں شریک ہوئے۔

وفاقی وزیر ریاض پیرزادہ، ساجد طوری، وزیراعظم کے مشیر امیر مقام، وزیر ہاؤسنگ مولانا عبدالواسع، وزیرمملکت ہاشم نوتیزئی وزیراعظم ہاؤس میں اجلاس میں شریک ہوئے۔ وفاقی وزرا سردار ایاز صادق، سعدرفیق سمیت کابینہ کے چند اراکین لاہور سے ویڈیو لنک پر اجلاس میں شریک ہوئے۔ وفاقی کابینہ اجلاس میں حکومتی قانونی ٹیم بھی شریک ہوئی۔ اجلاس میں اہم نوعیت کے قانونی امور پر غور کیا گیا۔

اجلاس میں وفاقی کابینہ نے ملکی سیاسی و معاشی صورتحال کا جائزہ لیا اور صدر مملکت کے سپریم کورٹ پریکٹس اینڈ پروسیجربل واپس بھجوائے جانے پر بھی غور کیا گیا۔

اتوار کی شب وزارت اطلاعات کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ وفاقی کابینہ کے اجلاس میں یہ طے پایا ہے کہ کابینہ کا اجلاس 10 اپریل 2023 کو دوبارہ بلایا جائے تاکہ ’مستقبل کی حکمت عملی‘ سے متعلق فیصلہ کیا جا سکے۔

وزارت اطلاعات کے بیان کے مطابق اجلاس میں ’چار۔ تین‘ کے تناسب سے آنے والے عدالتی حکم اور چار جج صاحبان کے تفصیلی فیصلے پر غور کیا گیا جبکہ چھ اپریل 2023 کو قومی اسمبلی کی منظور کردہ قرار داد پر بھی تفصیلی مشاورت کی گئی۔

بیان میں مزید بتایا گیا ہے کہ ’وزیر قانون سینیٹر اعظم نذیر تارڑ نے اجلاس کو مختلف آئینی و قانونی امور پر بریفنگ دی اور کابینہ کے ارکان کے سوالات کے جواب دیے۔‘

وزارت اطلاعات کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ’تمام پہلوﺅں کا بغور جائزہ لینے اور تفصیلی مشاورت کے بعد کابینہ نے متفقہ طور پر وزارت خزانہ کو ہدایت کی کہ وزارت قانون کی مشاورت سے اس معاملے میں پارلیمان سے رہنمائی حاصل کرنے کے لیے طریقہ کار اور ضابطہ کے مطابق سمری تیار کرے اور کل کابینہ کے اجلاس میں پیش کرے۔‘

ایک نجی ٹی وی کے ذرائع کا بتانا ہے کہ وفاقی کابینہ کے اجلاس میں پنجاب الیکشن کے لیے فنڈز کی منظوری نہیں دی جا سکی۔ وفاقی کابینہ نے پنجاب انتخابات فنڈز کا معاملہ قومی اسمبلی بھجوانے کی منظوری دیدی۔

اجلاس میں فیصلہ ہوا ہے پارلیمنٹ سپریم ہے جو فیصلہ کرے اس کا اختیار ہے، پنجاب اسمبلی کے انتخابات کے فنڈز کا فیصلہ پارلیمنٹ کرے گی۔

یاد رہے کہ سپریم کورٹ نے وزارت خزانہ کو 21 ارب روپے الیکشن کمیشن کو دینے کا حکم دیا تھا اور الیکشن کمیشن کو ہدایت کی تھی کہ 11 اپریل تک رپورٹ عدالت میں جمع کرائی جائے۔

دریں پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس کل بروز سوموار طلب کیا گیا۔ قومی اسمبلی نے چند روز قبل سپریم کورٹ پریکٹس اینڈ پروسیجر بل 2023 منظور کر کے توثیق کیلئے صدر پاکستان کو بھیجا تھا تاہم گذشتہ روز صدر عارف علوی نے بل نظر ثانی کیلئے واپس پارلیمنٹ کو بھیج دیا۔

اب اس حوالے سے پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس کل طلب کرلیا گیا ہے۔ قومی اسمبلی سیکرٹریٹ کے مطابق پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس کل دوپہر 2 بجے کے بجائے سہ پہر4 بجے ہوگا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں