سپریم کورٹ: پنجاب میں انتخابات کے حوالے سے کیس کی سماعت آج ہو گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ملک بھر میں ایک ساتھ انتخابات سے متعلق کیس کی سماعت چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بینچ آج کرے گا۔

رجسٹرار آفس کی جانب سے جاری نئے روسٹر کے مطابق چیف جسٹس عمر عطا بندیال آج صبح ساڑھے گیارہ بجے تک چیمبر ورک کریں گے جس کے بعد چیف جسٹس عمر کی سربراہی میں جسٹس اعجاز الاحسن اور جسٹس منیب اختر پر مشتمل تین رکنی خصوصی بینچ کیسز کی سماعت کرے گا۔

سپریم کورٹ کا تین رکنی بنچ: تصویر ویب گاہ عدالت عظمیٰ
سپریم کورٹ کا تین رکنی بنچ: تصویر ویب گاہ عدالت عظمیٰ

واضح رہے سپریم کورٹ نے 20 اپریل کو ہونے والی سماعت کے پانچ صفحات پر مشتمل تحریری حکمنامہ میں کہا تھا کہ’ 14مئی کو پنجاب میں انتخابات سے متعلق فیصلہ برقرار ہے۔‘ عدالت حکم نامے کے مطابق سیاستدانوں کے آپس کے تمام اختلافات پر مذاکرات کا اصل فورم سیاسی ادارے ہیں، عدالت کو ایک ہی دن پورے ملک میں انتخابات کے لیے مذاکراتی عمل پر کوئی اعتراض نہیں۔‘

عدالت نے یہ بھی کہا تھا کہ ’تمام ایگزیکٹو اتھارٹیز 14 مئی کو پنجاب میں الیکشن کے فیصلے پر عملدرآمد کرانے کی پابند ہیں۔‘

سپریم کورٹ نے حکم نامہ میں سیاسی رہنماوں کی مزید ملاقات کے لیے 26 اپریل کی تاریخ مقرر کرتے ہوئے کیس کی مزید سماعت 27 اپریل تک ملتوی کی تھی۔

حکم نامے میں کہا گیا تھا کہ ’27 اپریل تک سیاسی رابطوں اور ڈائیلاگ کی پیش رفت رپورٹ جمع کروائی جائےگی۔‘

دوسری جانب سپریم کورٹ نے سٹیٹ بینک اور وزارت خزانہ کو حکم دیا تھا کہ ’27 اپریل تک پنجاب اور خیبرپختونخوا میں انتخابات کے لیے 21 ارب روپے جاری کیے جائیں۔‘

’’فیصلہ سڑکوں پر ہو گا‘‘

ادھر تحریک انصاف کے رہنما اسد عمر نے لاہور میں میڈیا سے گفتگو میں کہا ہے کہ ’کل پارلیمنٹ میں اعلان بغاوت کیا گیا اور ذاتی حملے کیے گئے۔ آئین صرف سپریم کورٹ کے لیے نہیں بنا، عوام آئین کے تحفظ کے لیے باہر نکلیں گے۔‘

اسد عمر نے کہا ’اگر آئین کو توڑا گیا تو اس کا مطلب ہے کہ عوام کے حق پر ڈاکا ڈالا گیا ہے۔‘

اسد عمر: فائل فوٹو
اسد عمر: فائل فوٹو

اسد عمر کا دعویٰ تھا کہ آصف ذرداری، مریم نواز اور مولانا فضل الرحمان فیصلہ کر چکے ہیں کہ وہ شہباز شریف کی گرفتاری کی قربانی کے لیے تیار ہیں۔

اس موقع پر میڈیا سے گفتگو میں رہنما پی ٹی آئی فرخ حبیب کا کہنا تھا کہ ’حکومت انتخابات سے فرار حاصل کرنا چاہتی ہے۔ اگر سپریم کورٹ کے فیصلوں پر عمل درآمد نہیں ہوا تو پاکستانی عوام فیصلہ سڑکوں پر کرے گی۔‘

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں