دشمن جو کام 75برس میں نہ کرسکا،اقتدارپرست گروہ نے ایک دن میں کردکھایا:پاک فوج

شرانگیزی کی کارروائیوں میں ملوّث سہولت کاروں ،منصوبہ سازوں اورسیاسی بلوائیوں کو شناخت کرلیا گیا:آئی ایس پی آر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی یس پی آر) نے کہا ہے کہ دشمن جوکام گذشتہ 75 سال میں نہیں کرسکا،وہ اقتدار کی ہوس میں مبتلاسیاسی لبادہ اوڑھے ایک گروہ نے ایک دن میں کردکھایا ہے۔جو سہولت کار ،منصوبہ ساز اورسیاسی بلوائی بھی شرانگیزی کی کارروائیوں میں ملوّث ہیں،ان کی شناخت کرلی گئی ہے۔

آئی ایس پی آر نے بدھ کو جاری کردہ ایک سخت بیان میں کہا ہے کہ 9 مئی کا دن قومی تاریخ میں ایک سیاہ باب کے طورپریاد رکھا جائے گا۔پاکستان تحریکِ انصاف(پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان کو نیب کے اعلامیہ کے مطابق منگل کواسلام آباد ہائی کورٹ سے قانون کے مطابق حراست میں لیا گیا تھا۔اس گرفتاری کے فوری بعد ایک منظم طریقے سےآرمی کی املاک اور تنصیبات پرحملے کرائے گئے اور فوج مخالف نعرے بازی کی گئی۔

آئی ایس پی آر نے کہاکہ ایک طرف تو یہ شرپسند عناصرعوامی جذبات کو اپنے محدود اورخودغرضانہ مقاصد کی تکمیل کے لیے بھرپورطریقے سے ابھارتے رہے اور دوسری طرف لوگوں کی آنکھوں میں دھول جھونکتے ہوئے ملک کے لیے فوج کی اہمیت کو بھی اجاگر کرتے نہیں تھکتے اوریہ ان کے دوغلے پن کی مثال ہے۔

بیان میں واضح کیا گیا ہے کہ پاک فوج نے انتہائی تحمل، بردباری اور برداشت کا مظاہرہ کیا اور اپنی ساکھ کی بھی پروا نہ کرتے ہوئے ملک کے وسیع تر مفاد میں انتہائی صبراور برداشت سے کام لیا ہے جبکہ مذموم منصوبہ بندی کے تحت ایسی صورت حال پیدا کی گئی اورگھناؤنی کوشش کی گئی کہ آرمی اپنا فوری ردِ عمل دے جس کو اپنے مذموم سیاسی مقاصد کے لیے استعمال کیا جا سکے لیکن اس نے بالغ نظری سےاس سازش کو ناکام بنا دیا۔

آئی ایس پی آر کے مطابق ’’ہمیں اچھی طرح علم ہے اس تمام صورت حال کے پیچھے پارٹی کی کچھ شر پسند لیڈرشپ کے احکامات، ہدایات اور مکمل پیشگی منصوبہ بندی تھی اور ہے، جو سہولت کار ،منصوبہ ساز اورسیاسی بلوائی ان کارروائیوں میں ملوث ہیں،ان کی شناخت کر لی گئی ہے اور ان کے خلاف قانون کے مطابق سخت کارروائی کی جائے گی اور یہ تمام شرپسند عناصر اب نتائج کے خود ذمہ دار ہوں گے۔

بیان میں خبردار کیا گیا ہے کہ فوج سمیت تمام قانون نافذ کرنے والے اداروں، فوجی و ریاستی تنصیبات اور املاک پرکسی بھی مزید حملے کی صورت میں شدید ردعمل ظاہرکیا جائے گا جس کی مکمل ذمہ داری اسی ٹولے پر ہوگی جو پاکستان کو خانہ جنگی میں دھکیلنا چاہتا ہے اوراس کا متعدد مرتبہ اظہار بھی کرچکا ہے۔

آئی ایس پی آر کہا کہ کسی کو بھی عوام کو تشدد پر اکسانے اور قانون کو ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دی جاسکتی ہے۔

عمران خان کی گرفتاری پر ان کے حامیوں کے ملک گیرپُرتشدد احتجاج کے ردعمل میں پاک فوج کا یہ پہلا سخت بیان ہے۔پی ٹی آئی سے تعلق رکھنے والے بلوائیوں نے گذشتہ روز راول پنڈی میں پاک فوج کے جنرل ہیڈکوارٹرز(جی ایچ کیو)، لاہور میں کورکمانڈرکی اقامت گاہ ، فوجی دفاتر اور پشاور میں بھی فوجی تنصیبات پرحملے کیے تھے۔انھوں وہاں داخل ہوکر توڑ پھوڑ کی اورکورکمانڈرلاہور کی اقامت گاہ سے عام استعمال کی اشیاء اور پالتو پرندے تک بھی اٹھا کرلے گئے تھے لیکن حیرت انگیز طورپرسکیورٹی فورسزنے ان کی کوئی مزاحمت نہیں کی اورانھیں آزادانہ کھل کھیلنے کا موقع دیا ہے۔پی ٹی آئی کے حامی متشددمظاہرین نے آج پشاور میں ریڈیوپاکستان کی تاریخی عمارت کو نذرآتش کردیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں