جی ایچ کیو کا گیٹ توڑنے والے شر پسندوں کی شناخت، میاں محمود الرشید گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

پنجاب پولیس نے کہا ہے کہ پُرتشدد کاروائیوں میں ملوث شر پسندوں کی شناخت اور گرفتاریوں کا سلسلہ تیزی سے جاری ہے اور بیشتر عناصر کی شناخت ہو گئی ہے۔

راولپنڈی میں فوج کے جنرل ہیڈکوارٹرز (جی ایچ کیو) پر حملہ کر کے گیٹ توڑنے والے افراد کی شناخت کا عمل مکمل کر لیا گیا ہے۔

پولیس کی جانب سے جاری تفصیل کے مطابق شناخت شدہ شرپسند ملزمان میں افشاں کامران سکنہ راولپنڈی، فاطمہ احسان سکنہ راولپنڈی، شبانہ فیاض سکنہ راولپنڈی، عابد ملک سکنہ اسلام آباد، عاصم خورشید سکنہ کراچی، زاہد علی شاہ گیلانی سکنہ راولپنڈی، خان کاشف خان سکنہ راولپنڈی، منیزہ احمد سکنہ چکوال، جہانگیر احمد سکنہ اسلام آباد، محمد عثمان قریشی سکنہ راولپنڈی، ابوبکر احمد سکنہ اسلام آباد، پیرزادہ شہباز ناصر سکنہ راولپنڈی، انصر جاوید سکنہ مری اور حماد خان سکنہ راولپنڈی شامل ہیں۔

جی ایچ گیٹ پر حملہ کرنے والے مظاہرین اور میاں محمود الرشید
جی ایچ گیٹ پر حملہ کرنے والے مظاہرین اور میاں محمود الرشید

حکومتی اور عسکری املاک کو نقصان پہنچانے اور دنگا فساد کرنے والوں کے گرد قانون کا گھیرا تنگ کیا جا چکا ہے اور قانون نافذ کرنے والی چھاپہ مار ٹیمیں ملزمان کی گرفتاری کے لیے سرگرم ہیں۔

اُدھر لاہور میں کور کمانڈر کے گھر پر حملے میں ملوث 430 ملزمان کو گرفتار کیا گیا ہے۔ لاہور پولیس نے پاکستان تحریک انصاف کے رہنما میاں محمودالرشید کو ڈیفنس کے علاقے سے گرفتار کر لیا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق میاں محمود الرشید کے سیکریٹری نے گرفتاری کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ پی ٹی آئی رہنما کو 9 مئی کے واقعات میں درج مقدمات میں سے ایک میں گرفتار کیا گیا ہے۔

میاں محمود کو مقدمے میں نامزد کیا گیا تھا اور ضمانت کے لیے عدالت جا رہے تھے لیکن لاہور ہائی کورٹ کے قریب پہنچے تو وہاں پہلے سے موجود پولیس نے انہیں گرفتار کر لیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں