پی ڈی ایم کے مظاہرین ریڈ زون میں سپریم کورٹ کے باہر پہنچ گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

حکومتی اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ میں شامل جماعتوں کے کارکنان احتجاج اور دھرنے کے لیے سپریم کورٹ کے باہر پہنچ گئے۔

پی ڈی ایم جماعتوں کے کارکن گیٹ پھلانگ کر ریڈ زون میں داخل ہوئے اور نعرے لگاتے ہوئے عدالت عظمیٰ کے باہر پہنچے، جہاں ایف سی اور پولیس اہل کاروں نے انہیں روکنے کی کوشش کی۔ پولیس حکام کی جانب سے مظاہرین سے مذاکرات کی کوشش کی جا رہی ہے۔

پاکستان ڈیموکریٹک الائنس کے کارکن اسلام آباد میں سپریم کورٹ کے سامنے 15 مئی کو  ایک احتجاجی دھرنے شریک ہیں: اے پی فوٹو
پاکستان ڈیموکریٹک الائنس کے کارکن اسلام آباد میں سپریم کورٹ کے سامنے 15 مئی کو ایک احتجاجی دھرنے شریک ہیں: اے پی فوٹو

سپریم کورٹ کے باہر احتجاج کے لیے آنے والے کارکنوں کو روکنے کے لیے پولیس اور ایف سی کی بھاری نفری پہلے ہی الرٹ کردی گئی تھی جب کہ صورت حال کو دیکھتے ہوئے شاہراہ دستور کو بھی عارضی طور پر ٹریفک کے لیے بند کر دیا گیا ہے۔

’پی ڈی ایم‘ کے مظاہرین ریڈ زون میں داخلے کے بعد پولیس نے سیرینا چوک کا راستہ کھول دیا۔ ڈپٹی کمشنر اسلام آباد کے مطابق جے یو آئی کے وفد سےبات چیت جاری ہے، دھرنے کے مقام کا ابھی تک حتمی فیصلہ نہیں ہو سکا، اسلام آباد میں دفعہ 144نافذ ہے۔

اس سے قبل پی ڈی ایم و جے یو آئی کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن کی کال پر سپریم کورٹ آف پاکستان کے سامنے احتجاج ودھرنے کیلئے اسلام آباد پہنچنے والے پی ڈی ایم کے کارکنان نے ریڈزون میں داخلے کی کوشش کی تھی تاہم نادرا چوک پر پہنچنے والے کارکنوں کو پولیس نے واپس بھیج دیا تھا۔

پاکستان ڈیموکریٹک الائنس کے کارکن اسلام آباد میں سپریم کورٹ کے سامنے 15 مئی کو  ایک احتجاجی دھرنے شریک ہیں: اے پی فوٹو
پاکستان ڈیموکریٹک الائنس کے کارکن اسلام آباد میں سپریم کورٹ کے سامنے 15 مئی کو ایک احتجاجی دھرنے شریک ہیں: اے پی فوٹو

دوسری جانب وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں پی ڈی ایم کے سپریم کورٹ کے سامنے احتجاجی جلسے کے اعلان پر اسلام آباد کی ضلعی انتظامیہ اور پولیس نے وفاقی وزیرِ داخلہ رانا ثناء اللّٰہ کو خدشات سے آگاہ کر دیا۔

ذرائع کے مطابق اسلام آباد کی انتظامیہ اور پولیس نے وفاقی وزیرِ داخلہ رانا ثناء اللّٰہ کو بتایا ہے کہ سپریم کورٹ کے باہر عوام کے بڑے مجمعے کے جمع ہونے سے سکیورٹی خدشات ہوں گے۔ اسلام آباد کی انتظامیہ اور پولیس نے رانا ثناء اللّٰہ کو بتایا ہے کہ ریڈ زون میں اہم سرکاری عمارتیں اور سفارت خانے موجود ہیں۔

وزیرِ داخلہ کو اسلام آباد کی انتظامیہ اور پولیس نے بتایا ہے کہ احتجاج کے باعث شر پسند عناصر مجمعے کی آڑ میں ریڈ زون میں داخل ہو سکتے ہیں۔

واضح رہے کہ ریڈ زون میں پولیس، ایف سی اور رینجرز کے جوان تعینات ہیں، دفعہ 245 کے تحت اہم عمارتوں کے باہر پہلے ہی فوج تعینات ہے۔ پی ڈی ایم جماعتوں کے سپریم کورٹ کے باہر احتجاجی دھرنے کے سلسلے میں راولپنڈی میں سکیورٹی ہائی الرٹ ہے۔

پاکستان ڈیموکریٹک الائنس کے کارکن اسلام آباد میں سپریم کورٹ کے سامنے 15 مئی کو  ایک احتجاجی دھرنے شریک ہیں: اے پی فوٹو
پاکستان ڈیموکریٹک الائنس کے کارکن اسلام آباد میں سپریم کورٹ کے سامنے 15 مئی کو ایک احتجاجی دھرنے شریک ہیں: اے پی فوٹو

مری روڈ پر صدر سے فیض آباد تک پولیس کی بھاری نفری تعینات ہے۔ اسلام آباد پولیس نے عوام سے گذارش ہے کہ پرامن رہیں اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ساتھ تعاون کریں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں