بابوسر ٹاپ پر جولائی میں برف باری، سیاحوں کی موجیں لگ گئیں

گلگت بلتستان کے بالائی علاقوں میں برفباری کا سلسلہ وقفے وقفے سے جاری ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

وادی کاغان کے شمال درے بابو سرٹاپ پر چار سے پانچ انچ برف باری نے جولائی میں دسمبر جیسی ٹھنڈ کا نیا ریکارڈ قائم کر دیا، سیاحوں ٹھنڈے موسم اور برفیلے نظاروں خوب لطف اندوز ہو رہے ہیں۔

گلگت بلتستان کے بالائی علاقوں میں برفباری کا سلسلہ وقفے وقفے سے جاری ہے، جولائی کے مہینے میں پہلی دفعہ ریکارڈ برفباری ہوئی ہے اور درجہ حرارت نقطہ انجماد سے نیچے گر گیا۔

بابو سرٹاپ پر 4 سے 5 انچ تک برفباری ریکارڈ کی گئی ، جس کے بعد جولائی دسمبر بن گیا، جس نے سیاحتی مقام ناران کی خوبصورتی کو چار چاند لگا دیئے۔

ملک کےگرم علاقوں سےآنے والے سیاحوں کی ٹھنڈے موسم اور برف پر موج مستیاں عروج پر پہنچ گئیں، ناران میں سیاحوں کی آمد میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے، جو برفیلے نظاروں خوب لطف اندوز ہو رہے ہیں۔

خطرات کے پیش نظر بابوسر شاہراہ کو ٹریفک کےآمد ورفت کے لیے روک دیا گیا ہے اور لینڈ سلائیڈنگ سے شاہراہ قراقرم متعدد مقامات پربند ہے، جس کے باعث سینکڑوں سیاح اور مسافر پھنس گئے۔

ضلعی انتظامیہ کے مطابق بحالی کا کام جاری ہے۔ شاہراہ چلاس سےگلگت سیکشن کو یکطرفہ ٹریفک کے لیے بحال کردیا گیا ہے جبکہ تھور مینار کے مقام پربھی لینڈ سلائیڈنگ سےبند شاہراہ بحال کردی گئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں