جہلم میں گیس سلنڈر پھٹنے سے عمارت منہدم،6 افراد جاں بحق، 10 زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

صوبہ پنجاب کے ضلع جہلم میں گرینڈ ٹرنک روڈ پر واقع تین منزلہ عمارت گیس سلنڈر پھٹنے سے منہدم ہوگئی ہے جس کے نتیجے میں چھے افراد جاں بحق اور 10 زخمی ہوگئے ہیں۔

جہلم کے ڈپٹی کمشنر سمیع اللہ فاروق نے چھے افراد کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے جبکہ 10 زخمیوں کو اسپتال میں منتقل کیا گیا ہے۔انھوں نے کہا کہ ریسکیو ٹیمیں جائے حادثہ پرامدادی سرگرمیوں میں مصروف ہیں۔ اطلاعات ہیں کہ ملبے تلے چار سے پانچ افراد دبے ہوسکتے ہیں۔انھوں نے مزید کہا کہ آخری پھنسے ہوئے شخص تک پہنچنے اور پوری جگہ کو صاف کرنے تک ریسکیو آپریشن جاری رہے گا۔

قبل ازیں جہلم کے ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر (ریونیو) حسن طارق نے بتایا کہ تین منزلہ عمارت میں دھماکا اتوار کی صبح 9 بج کر 45 منٹ پر ہوا جس کے بعد ریسکیو ٹیموں نے فوری طور پر امدادی کارروائیاں شروع کردیں۔

انھوں نے مزید کہا کہ ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹراسپتال جہلم میں تمام سینیر ڈاکٹرز اور عملہ موجود ہے اور زخمیوں کاعلاج کیا جارہا ہے جبکہ ایک شدید زخمی کو راول پنڈی کے ہولی فیملی اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔

جہلم پولیس نے ایک ٹویٹ میں کہا کہ ضلعی پولیس آفیسر (ڈی پی او) ناصر محمود باجوہ امدادی کارروائیوں کی نگرانی کر رہے ہیں جبکہ ملبہ ہٹانے کے لیے بھاری مشینری کا استعمال کیا جا رہا ہے۔ڈی پی او نے کہا کہ ریسکیو آپریشن میں تمام دستیاب وسائل بروئے کار لائے جارہے ہیں۔

دریں اثناء ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر اسپتال میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے اور تمام عملہ اور ڈاکٹروں کو ڈیوٹی پر بلا لیا گیا ہے۔

وزیراعظم شہباز شریف نے جہلم میں عمارت گرنے سے ہونے والے جانی نقصان پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا اور سوگوار خاندانوں سے تعزیت کا اظہارکیا ہے۔انھوں نے زخمیوں کی جلد صحت یابی کے لیے دعا کی اور حکام کو ہدایت کی کہ انھیں بہترین طبی امداد مہیّا کی جائے۔

ایک روز قبل پنجاب کے ضلع سرگودھا کی تحصیل بھلوال میں ایک گاڑی میں گیس سلنڈر پھٹنے سے سات افراد جاں بحق اور 14 زخمی ہوگئے تھے۔واضح رہے کہ گذشتہ ماہ ملک بھر میں گیس سلنڈر پھٹنے کے واقعات میں تین بچوں سمیت پانچ افراد جاں بحق اور سات زخمی ہوگئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں