آرمی چیف پر’قاتلانہ حملے‘ کی سوشل میڈیا مہم، وزیر اعظم کی اداروں کو کارروائی کی ہدایت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

وزیراعظم شہباز شریف نے آرمی چیف جنرل سید عاصم منیر پر قاتلانہ حملے کی سوشل میڈیا پر مہم چلانے کی شدید مذمت کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان، چیف آف آرمی اسٹاف جنرل عاصم منیر کے خلاف مذموم اور بدنیتی پر مبنی مہم میں مصروف ہیں۔

انہوں نے کہا کہ آرمی چیف کو قاتلانہ حملے کی دھمکی دینے کے لیے پراکسیوں کا استعمال کرنے کی اس کی چال بری طرح بے نقاب ہو چکی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ریاستی علامتوں پر اس کے منصوبہ بند حملے ناکام ہونے کے بعد وہ واضح طور پر اقتدار میں واپسی کے لیے شدید بے چین ہے، اسے معلوم نہیں کہ اس کی دھمکی، تشدد اور نفرت کی سیاست کا وقت ختم ہو گیا ہے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ اس طرح کی انتہائی قابل مذمت حرکات کے ذریعے وہ صرف اپنے آپ کو بے نقاب کر رہا ہے، جس کا بنیادی مقصد اپنے ذاتی مفاد (اقتدار پر قبضہ) کو باقی تمام چیزوں سے بالاتر رکھنا ہے۔

اپنے ٹویٹ پیغام میں وزیراعظم نے کہا کہ 9 مئی کے یوم سیاہ کے لیے بھی ایسی ہی ذہن سازی کی گئی تھی، لہٰذا 9 مئی کے منصوبہ ساز، سہولت کار اور ہینڈلرز کو دوٹوک پیغام ہے کہ پاکستان اور اس کے اداروں کے خلاف ہر سازش کچل دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ آرمی چیف اور فوج کے خلاف گھٹیا، مذموم اور شرانگیز میڈیا مہم شیطانی ذہن کی منصوبہ بندی کا نتیجہ ہے، سازشی ذہن اور عناصر ملک میں سیاسی و معاشی استحکام کے خلاف پھر سے سرگرم عمل ہیں۔ شہداء کے خلاف غلیظ میڈیا مہم چلانے والوں کی نئی میڈیا مہم ایک ہی منصوبے کی کڑی ہے۔

وزیراعظم نے متعلقہ اداروں کو میڈیا مہم چلانے والوں کے خلاف اندرون وبیرون ملک قانونی اقدامات کی ہدایت کی ہے۔

انہوں نے کہ فوج اور اس کے سربراہ کے خلاف میڈیا مہم آزادی اظہار کے زمرے میں نہیں آتا، یہ صرف سازش ہے جسے پوری قوت سے روکنا قانونی فرض ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ قوم اس گھناؤنی سازش کو بھی اسی طرح ناکام بنائے گی جس طرح 9 مئی کو ملک میں خانہ جنگی کی سازش ناکام بنائی تھی، مایوس عناصر کو بوکھلاہٹ اور مایوسی میں ملک میں نیا بحران پیدا نہیں کرنے دیں گے، ان شاءاللہ۔ قوم اپنی فوج اور اس کے سربراہ کے ساتھ کھڑی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں