انڈس موٹرز پاکستان کی پہلی برآمد کنندہ آٹو موبائل کمپنی بننے جا رہی ہے

انڈس موٹر کمپنی نے ٹویوٹا مصر کے ساتھ اس ماہ سے اعلیٰ معیار کی مصنوعات کی برآمد کے لیے ایک معاہدے پر دستخط کیے ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان کی آٹوموبائل انڈسٹری کے لیے ایک اہم پیش رفت ہوئی ہے، ملک کی انڈس موٹر کمپنی (IMC) نے ٹویوٹا مصر کے ساتھ اس ماہ سے اعلیٰ معیار کی مصنوعات کی برآمد کے لیے ایک معاہدے پر دستخط کیے ہیں۔ اس طرح بین الاقوامی برآمد کا تجارتی اقدام کرنے والی یہ پہلی مقامی کار ساز کمپنی بن جائے گی۔

توقع ہے کہ اس پیشرفت سے دیگر پاکستانی کار ساز کمپنیوں کی حوصلہ افزائی ہو گی کہ وہ ایک ایسے وقت میں بین الاقوامی مارکیٹ سے فائدہ اٹھائیں جبکہ ملک کے مخدوش معاشی حالات کی وجہ سے ان کی پیداواری سرگرمیاں متأثر ہوئی ہیں۔

انڈس موٹر کمپنی (آئی ایم سی) کی ٹویوٹا مصر کے ساتھ کاروباری شراکت پہلا اقدام ہے جو آٹو انڈسٹری ڈیویلپمنٹ اینڈ ایکسپورٹ پالیسی (AIDEP) میں بیان کردہ ضروریات اور معیارات کو پورا کرے گا۔

یہ کمپنی پاکستان میں گذشتہ کئی عشروں سے ٹویوٹا گاڑیاں تیار کر رہی ہے۔

پورٹ قاسم میں کمپنی کے مینوفیکچرنگ یونٹ میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے آئی ایم سی کے چیف ایگزیکٹو، علی اصغر جمالی نے کہا کہ 'پاکستانی ساختہ مصنوعات' کے خواب کو سرحد کے اس پار لے جانا نہ صرف ہمارے بلکہ ملک کے لیے بھی ایک بہت بڑا اقدام ہے۔"

انہوں نے بات کو جاری رکھتے ہوئے کہا۔ "ٹویوٹا کی عالمی سپلائی چین کا حصہ بننا کمپنی کے اس عزم کا اعادہ ہے کہ وہ پاکستان کو دنیا کے نقشے پر دیکھنا اور ملک کی معیشت کو مضبوط کرنا چاہتی ہے۔ ہمیں امید ہے کہ اس اشتراک سے ہماری صلاحیتوں میں اضافہ ہوگا لیکن بات یہاں ختم نہیں ہو جاتی؛ ہمارا پلان ہے کہ عالمی سطح پر پاکستان کی

آٹو انڈسٹری کو اعتماد اور معیار کی علامت بنانے کے لیے اس سے بھی آگے جائیں۔"

جمالی نے کہا کہ ہماری کمپنی کے اس اقدام سے پاکستان اور افریقہ کے درمیان روابط کو مزید تقویت ملے گی جس سے ملک کی ابھرتی ہوئی تجارتی ترجیحات پوری ہوں گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں