پرویز الہٰی نے ڈی سی لاہور کے نظربندی احکامات کو عدالت عالیہ میں چیلنج کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے صدر اور سابق وزیر اعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الہٰی نے اپنی نظر بندی سے متعلق ڈی سی کے احکامات کو لاہور ہائی کورٹ میں چیلنج کر دیا۔

پرویز الہٰی کی جانب سے عامر سعید راں ایڈووکیٹ نے لاہور ہائی کورٹ میں درخواست دائر کی۔ درخواست میں ڈی سی لاہور سمیت دیگر کو فریق بنایا گیا ہے۔

درخواست گزار کی جانب سے مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ پرویز الہٰی کو سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ پرویز الہٰی کی تمام مقدمات میں ضمانت منظور ہو چکی ہے۔ عدالت دہشت گردی کے مقدمے میں بھی پرویز الہٰی کو حفاظتی ضمانت دے چکی ہے۔

چوہدری پرویز الہٰی کی جانب سے درخواست میں مؤقف اپنایا گیا ہے کہ نظر بندی کا نوٹیفکیشن عدالتی فیصلے پر اثر انداز ہونے کے مترادف ہے۔

درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ پرویز الہٰی کو نظر بند کرنے کا ڈی سی کا نوٹیفکیشن کالعدم قرار دیا جائے۔

واضح رہے کہ سابق وزیرِ اعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الہٰی کو ایک ماہ کے لیے تھری ایم پی او کے تحت نظر بند کر دیا گیا ہے۔

ڈپٹی کمشنر لاہور نے چوہدری پرویز الہٰی کی نظربندی کا حکم نامہ جاری کر دیا ہے۔

ڈی سی لاہور کی جانب سے جاری کیے گئے حکم نامے کے مطابق چوہدری پرویز الہٰی کو تھری ایم پی او کے تحت نظربند رکھنے کے لیے پولیس نے سفارش کی تھی جس پر چوہدری پرویز الہٰی کی ایک ماہ کی نظر بندی کے احکامات جاری کیے گئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں