وزیر اعظم سے یوکرینی وزیر خارجہ کی ملاقات، دوطرفہ تعلقات کو مزید فروغ دینے کا عزم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

وزیراعظم محمد شہباز شریف نےاقوام متحدہ کے منشور کے مطابق یوکرین تنازع کے مذاکرات کے ذریعے سفارتی تصفیے کی ضرورت پر زور دیا ہے اور کہا ہے کہ یوکرین تنازع سے کئی ممالک کی معیشتوں کو نقصان پہنچا ہے۔انھوں نے پاکستان اور یوکرین کے درمیان دوطرفہ تعلقات کو مزید فروغ دینے کا عزم ظاہر کیا ہے۔

جمعرات کو وزیراعظم آفس کے میڈیا ونگ سے جاری کردہ بیان کے مطابق وزیر اعظم محمد شہباز شریف سے یوکرین کے وزیر برائے خارجہ امور دمیتروکلیبا نے ملاقات کی۔ وزیراعظم نے یوکرین کی آزادی کے بعد سے دونوں ممالک کے درمیان پرجوش اور دوستانہ تعلقات کو ذکرکیا اور دوطرفہ تعلقات کو مزید فروغ دینے کے عزم کا اظہار کیا۔

انھوں نے دونوں ممالک کے درمیان تجارت، سرمایہ کاری، دفاع، تعلیم اور ثقافت کے ساتھ ساتھ جنوبی ایشیا اور یوریشیا کے خطوں میں سلامتی کی صورت حال سمیت باہمی دلچسپی کے علاقائی اور عالمی امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

وزیر اعظم نے اس بات پر روشنی ڈالی کہ یوکرین کے تنازع کا عالمی سطح پر بڑا اثر پڑا ہے جس سے کئی ممالک کی معیشتوں کو نقصان پہنچا ہے۔

وزیر خارجہ دمترو کلیبا نے وزیراعظم کو یوکرین کی موجودہ صورت حال پر بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ ان کے ملک نے ہمیشہ تعاون اور دوستی پر مبنی دیرینہ اور خوشگوار تعلقات کا فائدہ اٹھایا ہے۔ان کا مشترکہ مقصد عالمی امن اور علاقائی استحکام میں کردار ادا کرنا ہے۔واضح رہے کہ یوکرینی وزیر خارجہ 20 سے 21 جولائی 2023 تک پاکستان کے دورے پر ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں