14 سالہ گھریلو ملازمہ پر سول جج اسلام آباد کی اہلیہ کا مبینہ تشدد

حالت بگڑنے پر جج کی اہلیہ نے بچی کی والدہ کو اڈے پر بلا کر بچی کو اس کے حوالے کیا اور رفو چکر ہو گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سرگودھا سے تعلق رکھنے والی 14 سالہ گھریلو ملازمہ پر سول جج اسلام آباد کی اہلیہ کا مبینہ تشدد، حالت بگڑنے پر جج کی اہلیہ نے بچی کی والدہ کو اڈے پر بلا کر بچی کو اس کے حوالے کیا اور رفو چکر ہو گئی۔ بچی تشویشناک حالت میں ڈی ایچ کیو اسپتال سے لاہور ریفر کر دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق سرگودھا کے علاقے 88 جنوبی کی 14 سالہ رضوانہ کو اسکے والدین نے مختار نامی شخص کے ذریعے اسلام آباد میں سول جج کے گھر میں ملازمت دلوائی، چھ ماہ قبل ملازمت پر جانے والی رضوانہ کو سول جج اسلام آباد عاصم کی اہلیہ مبینہ طور پر تشدد کا نشان بناتی رہی۔ والدین کے مطابق متاثرہ بچی رضوانہ کے سارے جسم پر شدید تشدد سے زخموں کے نشانات واضح موجود ہیں۔

ہسپتال ذرائع کے مطابق بچی کے سر اور چہرے پر تشدد سے گہرے زخم بنے ہوئے ہیں جبکہ دائیں بازو پر سوجن ہے۔ متاثرہ بچی کے والدین نے میڈیا کو بتایا کہ سول جج کی اہلیہ نے گذشتہ روز زیور چوری کا الزام لگا کر بیٹ اور ڈنڈے کے ساتھ تشدد کا نشانہ بنایا جس سے بچی کو شدید زخم آئے اور اس کی حالت غیر ہونے لگی۔

اس کے بعد خاتون خانہ نے بچی کی والدہ کو سرگودھا سے اسلام آباد بلوایا اور اڈے پر ہی بچی کو تشویش ناک حالت میں والدہ کے حوالے کر کے رفو چکر ہو گئی۔ بچی کی والدہ اسے لے کر واپس سرگودھا آئی جہاں پر اسے ڈی ایچ کیو اسپتال میں طبی امداد دی جا رہی ہے۔

دوسری طرف وقوعے کی اطلاع ملنے پر پولیس بھی موقع پر پہنچ گئی۔ اے ایس پی سٹی عثمان میر نے میڈیا کو بتایا کہ ملازمت پر بھجوانے والے شخص کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔ قانون کے مطابق کارروائی ہو گی۔

جوڈیشل اکیڈمی میں تعینات سول جج عاصم حفیظ نے اپنے موقف میں کہا کہ بچی پر کوئی تشدد نہیں ہوا، میں بذات خود تشدد کے خلاف ہوں، بچی کو جب کہا گیا کہ تمہیں گھر چھوڑ آتے ہیں تو اس نے دیوار کے ساتھ سر مارا، بچی نے گھر کے باہر رکھے گملے سے مٹی کھائی جس سے اس کے چہرے پر داغ بن گیا۔

سول جج عاصم حفیظ نے کہا کہ بیوی کا سونا غائب تھا لیکن بچی پر تشدد نہیں ہوا، بچی کو اہلیہ نے اس کی والدہ کے حوالے کیا تو والدہ نے خود بچی کو مارا پیٹا، بچی کا پتہ چلا ہے کہ وہ لاہور ہے تو میں خود لاہور جا رہا ہوں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں