پاکستان میں اقتصادی زونز میں چینی سرمایہ کاری بڑھانے کی ضرورت ہے:عارف علوی

صدرپاکستان کی چین کے نائب وزیراعظم ،ہی لی فینگ کی قیادت میں وفد سےملاقات میں گفتگو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

پاکستان صدر ڈاکٹرعارف علوی نے چین کے ساتھ دوطرفہ اقتصادی تعاون کو مزید مضبوط بنانے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستانی معیشت کے مختلف شعبوں بالخصوص خصوصی اقتصادی زونز میں چینی سرمایہ کاری بڑھانے کی ضرورت ہے۔

انھوں نے کہا کہ پاکستان اپنے زراعت، انفارمیشن ٹیکنالوجی (آئی ٹی)، ٹرانسپورٹ اور ٹیکسٹائل کے شعبوں کو مضبوط بنانے کے لیے چین کے تعاون اور مدد کا خواہاں ہے۔انھوں نے ان خیالات کا اظہارایوان صدر میں چین کے صدر شی جن پنگ کے نمائندہ خصوصی اور چین کی اسٹیٹ کونسل کے نائب وزیراعظم ، ہی لی فینگ ، سے ملاقات میں کیا۔

صدر عارف علوی نے چینی وفد کا خیرمقدم کرتے ہوئے اس بات پر روشنی ڈالی کہ پاکستان اور چین کے درمیان تزویراتی تعاون پرمبنی شراکت داری قائم ہے اور دونوں ممالک ہمیشہ مشکل گھڑی میں ایک دوسرے کے ساتھ کھڑے ہوئے ہیں۔ انھوں نے مزید کہا کہ پاکستان اور چین کے درمیان منفرد تعلقات ہیں اور دنیا کو دونوں برادر ممالک کی دوستی سے سبق سیکھنا چاہیے۔

انھوں نے اس بات کو سراہا کہ دونوں ممالک کے درمیان دوطرفہ تعلقات تعاون کے نئے شعبوں تک وسعت پا رہے ہیں۔پاک چین اقتصادی راہداری کے حوالے سے بات کرتے ہوئے صدرعلوی نے کہا کہ سی پیک خطے میں خوش حالی لانے کے ساتھ ساتھ پاکستان کے معاشی منظرنامے کو بھی بدل دے گا۔

انھوں نے مزید کہا کہ سی پیک کے تحت منصوبوں نے پاکستان میں بجلی کی کمی پر قابو پانے میں کافی مدد کی ہے۔پاکستان تمام بنیادی امور پر چین کی بھرپور حمایت جاری رکھے گا۔صدر مملکت نے مشکل وقت میں پاکستان کی مالی مدد کرنے پر چینی حکومت کا شکریہ ادا کیا اور اس کے علاوہ جموں و کشمیر کے متنازع مسئلہ پر چین کے اصولی مؤقف کی بھی تعریف کی۔

انھوں نے چین کے نائب وزیراعظم کو پاک چین دوستی میں ان کے کردار اورخدمات کے اعتراف میں ہلالِ پاکستان کے اعزاز سے نوازااور پاک چین دوستی کو فروغ دینے اور سی پیک کے منصوبوں پر کامیابی سے عمل درآمد کی نگرانی پر ان کے کردار کو سراہا۔

چینی نائب وزیراعظم نے مارچ 2020 میں صدر ڈاکٹر عارف علوی کے دورۂ چین کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ چینی عوام یہ دورہ یاد رکھیں گے کیونکہ صدرِ پاکستان نے کرونا وبا کے خطرات کے باوجود مشکل وقت میں چین کا دورہ کیا تھا۔انھوں نے مسرت کے ساتھ اس بات کا اظہار کیا کہ سی پیک سے پاکستان کے سماجی، اقتصادی اور بنیادی ڈھانچے کے منظر نامے میں اہم تبدیلی آئی ہے اور اب یہ پورے خطے اور اس سے باہر بھی پاکستان کی اقتصادی، تجارتی اور رابطہ کاری کی حیثیت کو مزید بڑھائے گا۔

انھوں نے صدرپاکستان کو چین میں غربت کے خاتمے کے لیے چینی حکومت کے اقدامات کے بارے میں آگاہ کیا۔ انھوں نے ہلال پاکستان عطا کرنے پر صدر مملکت کا شکریہ ادا کیا۔انھوں نے ڈاکٹرعارف علوی کو چینی صدر شی جن پنگ کی جانب سے نیک خواہشات کا پیغام بھی پہنچایا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں