یورپی ایجنسی کی وارننگ کے باوجود پاکستانی فضائی حدود فلائٹ آپشنز کے لیے ’محفوظ‘ قرار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

پاکستان سول ایوی ایشن اتھارٹی (پی سی اے اے) کا کہنا ہے کہ پاکستان کی فضائی حدود ہر طرح کے فلائٹ آپریشنز کے لیے "محفوظ" ہیں۔ اس ہفتے ایک یورپی ایئر سیفٹی ایجنسی کی جانب سے کراچی اور لاہور شہر میں کم بلندی پر پرواز کرنے والے طیاروں کو "مسلسل ممکنہ خطرے" کے بارے میں خبردار کیا گیا تھا۔

28 جولائی کو یورپی یونین ایوی ایشن سیفٹی ایجنسی (ای اے ایس اے) نے ایک ایڈوائزی جاری کی جس میں کہا گیا کہ "پاکستان میں "تشدد پسند غیر ریاستی عناصر کے پاس تصدیق شدہ اینٹی ایوی ایشن ہتھیاروں" کی موجودگی کا مطلب ہے کہ پاکستان میں لاہور اور کراچی میں 260 فلائٹ لیول (ایف ایل) سے کم بلندی پر فلائٹ آپریشنز کو بہت زیادہ خطرہ ہے۔"

ایڈوائزری میں یہ بھی ذکر کیا گیا کہ کشمیر کا بین الاقوامی طور پر متنازع ہمالیائی خطہ مسلسل چپقلش والا علاقہ ہے۔ اس بارے میں مزید کہا گیا ہے کہ "علاقے میں غیر متوقع طور پر ہونے والی فوجی کارروائیاں پروازوں کے لئے ایک ممکنہ خطرہ ہیں اور کسی امکانی فوجی تنازع میں اضافے کی صورت میں پروازوں کی شناخت میں غلطی ہو سکتی ہے۔"

پی سی اے اے کے ترجمان سیف اللہ نے اس ایڈوائزی کو نظر انداز کرتے ہوئے کہا ہے کہ ای اے ایس اے ایسے انتباہ پہلے بھی جاری کر چکی ہے۔

سیف اللہ نے عرب نیوز کو بتایا کہ "پاکستان کی طرف دیکھیں تو یہاں سے ہر طرح کے طیارے پرواز کرتے ہیں۔ ایسے کسی (خطرے کا) امکان اس وقت موجود نہیں جس کی بنا پر طیاروں کو اتارا جائے، کیونکہ اگر ایسا کوئی خطرہ ہوتا تو ہم سب سے پہلے طیاروں کو اتارتے۔"

انہوں نے دو ٹوک الفاظ میں واضح کیا کہ "پاکستان ہر طرح کے فلائٹ آپریشنز کے لیے محفوظ ہے۔" ای اے ایس اے کے مطابق، اس کی ایڈوائزی 31 جنوری، 2024 تک نافذ رہے گی۔

اس کے علاوہ، پاکستان کی قومی ایئرلائن کو ای اے ایس اے اور یورپی کمیشن کی جانب سے پروازوں پر عائد کردہ پابندی کا سامنا ہے۔ یہ پابندی مئی 2020 میں کراچی میں ہونے والے ہوائی حادثے کے بعد عائد کی گئی تھی اور ملک کے ایک سابق وزیر ہوا بازی نے قومی ایئر لائن کے اندر لائسنس کے مسائل کو اس کی وجہ قرار دیا تھا۔

پی سی اے اے کے ترجمان نے کہا ہے کہ پروازوں پر پابندی کے حوالے سے ہم ای اے ایس اے کے ساتھ "تعمیری گفتگو" جاری رکھے ہوئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں