سپریم کورٹ نے چیئرمین پی ٹی آئی کی توشہ خانہ کیس کا ٹرائل روکنے کی درخواست نمٹا دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سپریم کورٹ آف پاکستان نے پاکستان تحریک انصاف [پی ٹی آئی] کے چیئرمین اور سابق وزیر اعظم کی توشہ خانہ کیس کا ٹرائل روکنے کی درخواست نمٹا دی۔

عدالت نے قراردیا ہے کہ جب تک اسلام آباد ہائی کورٹ توشہ خانہ کیس میں فیصلہ جاری نہیں کرتی اس وقت تک ٹرائل کورٹ حتمی فیصلہ جاری نہ کرے۔ پی ٹی آئی چیئرمین کی توشہ خانہ کیس کا ٹرائل روکنے کی درخواست پر حکم امتناع جاری نہ ہوسکا۔

جسٹس یحییٰ خان آفریدی کی سربراہی میں جسٹس حسن اظہر رضوی اور جسٹس مسرت ہلالی پر مشتمل تین رکنی بینچ نے چیئرمین پی ٹی آئی کی درخواست پر سماعت کی۔

دوران سماعت عمران خان کے وکیل خواجہ حارث احمد کا کہنا تھا کہ ان کے موکل نے ٹرائل کورٹ کے فیصلوں کے خلاف اسلام آباد ہائی کورٹ سے رجوع کر رکھا ہے اورہائی کورٹ میں معاملہ زیر سماعت ہے اور ابھی تک فیصلہ نہیں کیا گیا، اسلام آباد ہائی کورٹ کا فیصلہ آنے تک اس کیس میں ہمیں سپریم کورٹ کا اس کیس میں فیصلہ درکار نہیں۔

سپریم کورٹ کا کہنا تھا کہ قانون بڑا واضح ہے کہ ضابطہ فوجداری کی دفعہ 526 کے تحت جب تک ٹرائل کورٹ کے کسی فیصلے کے خلاف ہائی کورٹ کوئی فیصلہ جاری نہ کرے تو ٹرائل کورٹ کوئی فیصلہ نہیں کرسکتی۔

عدالت نے قرار دیا ہے کہ جب تک اسلام آباد کورٹ توشہ خانہ کیس میں کوئی فیصلہ جاری نہیں کرتی اس وقت تک ٹرائل کورٹ کوئی حتمی حکم جاری نہیں کر سکتی لہذا اسلام آباد کورٹ کے فیصلہ کا انتظار کیا جائے۔

دونوں فریقین کے اتفاق رائے کے بعد عدالت نے کیس نمٹا دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں