بلوچستان میں فوجی آپریشن، دو عسکریت پسند ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستانی فوج نے جمعہ کو کہا کہ پاکستانی سکیورٹی فورسز نے صوبہ بلوچستان میں انٹیلی جنس معلومات کی بنا پر آپریشن میں دو عسکریت پسندوں کو ہلاک کر دیا ہے۔

فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق یہ آپریشن بلوچستان کے ضلع کیچ کے علاقے مزاباند رینج میں کیا گیا۔

اس آپریشن میں ایک اور عسکریت پسند زخمی ہوا جب کہ سیکورٹی اہلکاروں نے جائے وقوعہ سے بھاری مقدار میں اسلحہ اور گولہ بارود بھی قبضے میں لے لیا۔

آئی ایس پی آر نے ایک بیان میں کہا کہ "ہلاک شدہ دہشت گرد معصوم شہریوں اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کو نشانہ بنانے میں ملوث تھے۔"

بلوچستان جس کی ایران اور افغانستان کے ساتھ غیر محفوظ سرحد ملتی ہے، تقریباً دو عشروں سے بلوچ قوم پرستوں کی جانب سے نچلی سطح کی شورش کا منظر پیش کرتا ہے۔

علیحدگی پسندوں نے کہا ہے کہ وہ اس کے خلاف لڑ رہے ہیں جو ان کی نظر میں وفاق کی طرف سے صوبے کی دولت کا ناجائز استحصال ہے۔ پاکستانی ریاست اس بات کی تردید کرتی ہے۔

پاکستان طویل عرصے سے ہمسایہ ممالک اور دشمن ایجنسیوں پر بلوچ علیحدگی پسند جنگجوؤں اور دیگر مسلح گروپوں کو پناہ دینے کا الزام لگاتا رہا ہے جو صوبہ بلوچستان میں سرگرم ہیں۔

جولائی میں بلوچستان میں ایک گیریژن پر حملے میں نو پاکستانی فوجیوں کی ہلاکت کے بعد پاکستانی حکومت نے افغانستان میں عسکریت پسندوں کی "محفوظ پناہ گاہوں" پر شدید تحفظات کا اظہار کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں