پاکستان کے یومِ آزادی پرکراچی میں ہوائی فائرنگ کے واقعات؛2 افراد جاں بحق، 85 زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان کے 76 ویں یومِ آزادی کے موقع پر کراچی میں ہونے والی ہوائی فائرنگ کے نتیجے میں دو افراد جاں بحق اور 85 زخمی ہوگئے ہیں۔

کراچی کے علاقے جمشید کوارٹرز کے اسٹیشن ہاؤس آفیسر (ایس ایچ او) گل بیگ نے سوموار کے روز بتایا کہ ایک 25 سالہ خاتون اپنے اہل خانہ کے ساتھ موٹر سائیکل پر سفر کر رہی تھی۔جب وہ پیپلزچورنگی سے گزر رہی تھی تو اسے نامعلوم سمت سے گولی آ لگی۔

پولیس سرجن ڈاکٹر سُمیّہ سیّد کے مطابق خاتون کوشدید زخمی حالت میں جناح پوسٹ گریجوایٹ میڈیکل سنٹر لے جایا گیا جہاں ڈاکٹروں نے اسے مردہ قرار دے دیا۔

ایک اور واقعہ میں بغدادی کے ایس ایچ او غلام یاسین نے بتایا کہ لیاری میں اپنے گھر کی چھت پر سونے والا ایک شخص گولی لگنے سے جان کی بازی ہارگیا۔ایس ایچ او نے مزید بتایا کہ اس شخص کو ڈاکٹر رتھ فاؤ سول اسپتال کراچی لے جایا گیا جہاں ڈاکٹروں نے اسے مردہ قرار دے دیا۔

ڈاکٹر سیّد نے مزید بتایا کہ گولی لگنے کے واقعات میں زخمی ہونے والے 32 افراد کو علاج کے لیے جناح پوسٹ گریجوایٹ میڈیکل سنٹر لایا گیا۔ان میں سے ایک نوجوان کی سر پر گولی لگنے کی وجہ سے حالت تشویش ناک ہے۔

انھوں نے مزید بتایا کہ زخمیوں کی عمریں 12 سے 55 سال کے درمیان ہیں، ان میں سے پانچ نوعمر اور آٹھ خواتین ہیں۔کراچی کے عباسی شہید اسپتال میں بھی گولی لگنے سے زخمی ہونے والے 32 افراد کو لایا گیا ہے۔ ان کی عمریں آٹھ سے 50 سال کے درمیان ہیں۔ان میں آٹھ نوعمر اورآٹھ خواتین شامل ہیں۔

انھوں نے مزید کہا کہ رتھ فاؤ سول اسپتال میں 21 زخمیوں کو منتقل کیا گیا ہے۔ ان کی عمریں سات ماہ سے 60 سال کے درمیان ہیں۔ان میں پانچ نوعمر اور تین خواتین شامل ہیں۔پولیس سرجن نے بتایا کہ آرام باغ کی حدود میں برنس روڈ کے قریب پیپلز اسکوائر پر سات ماہ کا بچہ گولی لگنے زخمی ہوگیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں