یومِ آزادی کے موقع پر گوگل کا پاکستان کے نام نیا ڈوڈل

گوگل دنیا بھر میں مشہور پاکستانی ٹرک آرٹ، قومی جانور مارخور اور لاہور کے شاہی قلعے کو ماضی میں ڈوڈل کی زنیت بنا چکا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

دنیا کا سب سے بڑا سرچ انجن گوگل دنیا بھر میں مختلف ثقافتی اور سماجی ایونٹس کے موقع پر دلچسپ ڈوڈلز تیار کرتا رہتا ہے، پاکستان کے 77واں یوم آزادی پر گوگول نے نیا ڈوڈل جاری کیا ہے۔

عام طور پر ایک ڈوڈل کسی ملک کی ثقافت اور روایات کا عکاس ہوتا ہے اور اس بار گوگل نے پاکستان کے یوم آزادی پر دریائے سندھ کی ڈولفن کو اپنے ڈوڈل کا حصہ بنایا ہےجو بالخصوص پاکستان میں ہی پائی جاتی ہیں۔

اس ڈولفن کو اردو اور سندھی زبان میں اندھی بھلن کہا جاتا ہے تو اب انتہائی نایاب ہو گئی ہیں۔

اس کا شمار ان جانداروں میں ہوتا ہے جن کی نسل خطرے سے دوچار ہے اور ماحول کے بقا کے لیے کام کرنے والے عالمی ادارے کی ریڈ لسٹ میں بھی شامل ہے۔

کہا جاتا ہے کہ یہ ڈولفن قدرتی طور پر اندھی ہوتی ہے اور پانی میں آواز کے سہارے راستہ تلاش کرتی ہے۔

نایاب نسل کی نابینا ڈولفن اکثر دریائے سندھ سے راستہ بھول کر نہروں میں آ نکلتی ہیں اور کبھی کبھار پھنس جاتی ہیں، اس صورت میں ان کو فوری طور پر نکال کر دریا میں واپس بھیجنا بہت ضروری ہوتا ہے ورنہ ان کی موت یقینی ہو جاتی ہے۔

ماہرین ماحولیات کہتے ہیں کہ دریائے سندھ میں کیمیائی مادوں اور دیگر آلودگی کے ساتھ ساتھ ڈیموں کی تعمیر، ڈولفن کا مچھلیاں پکڑنے کے لیے بچھائے گئے جالوں میں حادثاتی طور پر پھنس جانا، میٹھے پانی کے بہاؤ میں کمی واقع ہونا اور گوشت اور تیل حاصل کرنے کے لیے ڈولفن کا شکار اس کی نسل کو ختم کرنے کا باعث بن رہا ہے۔

خیال رہے کہ گوگل 2011 سے پاکستان کے یوم آزادی پر ڈوڈل بنا رہا ہے، سب سے پہلے اس نے چاند ستاروں اور مینار پاکستان سے مزئین سبز رنگ کے ڈوڈل کے ذریعے مبارکباد دینے کا سلسلہ شروع کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں