جانوروں کی فلاحی تنظیم کو ہتھنی مدھوبالا کو پناہ گاہ میں منتقل کرنے کی اجازت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

جانوروں کی عالمی فلاحی تنظیم فور پاز کی جانب سے جمعرات کو ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان کے جنوبی بندرگاہی شہر کراچی کے میئر نے گروپ کو بیمار ہتھنی مدھوبالا کو ایک نئی پناہ گاہ میں منتقل کرنے کی منظوری دے دی ہے۔

پاکستان میں صرف تین زندہ قیدی ہاتھیوں میں سے ایک مدھوبالا کو 2009 میں تنزانیہ سے تین دیگر ہاتھیوں کے ساتھ جنوبی ایشیائی ملک لایا گیا تھا۔ اس کی ایک دیرینہ ساتھی ہتھنی 17 سالہ نور جہاں کا اپریل میں کراچی چڑیا گھر میں انتقال ہو گیا تھا جو خون کے ٹریپانوسومائیسس انفیکشن سمیت متعدد بیماریوں میں مبتلا تھی۔

جانوروں کے حقوق کے لیے کام کرنے والی تنظیموں بشمول فور پاز نے کراچی چڑیا گھر کی خراب حالت پر تشویش کا اظہار کیا ہے جہاں نور جہاں کی موت کے بعد مدھوبالا قیدِ تنہائی میں ہے۔ فور پاز نے مدھوبالا کو کراچی سفاری پارک میں ہاتھیوں کی ایک "نسل کے لیے موزوں" پناہ گاہ میں منتقل کرنے کے لیے فعال مہم چلائی ہے۔

جانوروں کے مصری ڈاکٹر امیر خلیل جنہوں نے نور جہاں کا علاج کیا تھا، نے جون میں کہا کہ مدھوبالا بھی خون کے اسی ٹریپانوسومائیسس انفیکشن میں مبتلا تھی۔

فور پاز نے ایک بیان میں کہا، "عالمی جانوروں کی بہبود کی تنظیم فور پاز کراچی چڑیا گھر میں واحد افریقی ہتھنی مدھوبالا کی منتقلی کی تیاری کے لیے کراچی، پاکستان واپس آ گئی ہے۔"

بیان میں مزید کہا گیا، "گذشتہ روز کراچی کے نو منتخب میئر مرتضیٰ وہاب کے ساتھ ایک اہم ملاقات کے بعد فور پاز جانوروں کے رہنما ڈاکٹر عامر خلیل کو منظوری دی گئی کہ وہ مدھوبالا کو کراچی چڑیا گھر سے سفاری پارک منتقل کرنے کی تیاری شروع کریں۔

فور پاز نے کہا کہ مدھوبالا پناہ گاہ میں ساتھی افریقی ہتھنیوں سونیا اور ملکہ کے ساتھ 14 سال بعد دوبارہ مل جائے گی۔ ڈاکٹر خلیل نے کہا کہ مرتضیٰ وہاب نے اس بات کو یقینی بنانے کے لیے اقدامات کرنے پر اتفاق کیا ہے کہ یہ پناہ گاہ ہاتھیوں کے لیے زیادہ موزوں ہو۔

ڈاکٹر خلیل نے کہا، "ان اقدامات میں پناہ گاہ کے میدانوں کی توسیع، آبی ذخائر کی شمولیت، افزودگی کی خصوصیات اور حفاظتی اقدامات کے ساتھ ساتھ زمینی اور انتظامی عملے کی تربیت شامل ہے تاکہ ایک ایسی جگہ پیدا کی جا سکے جس میں مدھوبالا، ملیکا اور سونیا نشوونما اور خوشحالی حاصل کر سکیں۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں