توشہ خانہ کیس، اسلام آباد ہائیکورٹ نے چئیرمین پی ٹی آئی عمران خان کی سزا معطل کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسلام آباد ہائی کورٹ نے چئیرمین پی ٹی آئی عمران خان کی جانب سے توشہ خانہ کیس میں سزا معطل کر نے کی درخواست منظور کرتے ہوئے انہیں ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دیا ہے۔

چیئرمین پی ٹی آئی کی سزا معطلی کی درخواست پر اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس عامر فاروق اور جسٹس طارق محمود جہانگیری پر مشتمل بینچ نے محفوظ فیصلہ سنا دیا۔

عدالت نے مختصر فیصلے سناتے ہوئے چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کو ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دیا۔

چیف جسٹس عامر فاروق نے فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ کیس کا فیصلہ کاز لسٹ میں شامل نہیں تھا، اس لیے فیصلے کی نقل کچھ دیر میں فراہم کر دی جائے گی، ابھی بتا رہے ہیں کہ درخواست منظور کرلی ہے۔

واضح رہے کہ ایڈیشنل سیشن جج ہمایوں دلاور نے پانچ اگست کو اسلام آباد کی ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ میں توشہ خانہ فوجداری کیس کا فیصلہ سنایا تھا۔

اس فیصلے میں پی ٹی آئی چیئرمین کو 3 سال قید اور ایک لاکھ روپے جرمانے کی سزا سناتے ہوئے بدعنوانی کا مرتکب قرار دیا گیا تھا۔ جرمانے کی عدم ادائیگی پر چیئرمین پی ٹی آئی کو مزید چھ ماہ کی قید بھگتنی ہو گی۔

فیصلے کے بعد چیئرمین پی ٹی آئی کو اسی شام زمان پارک لاہور والی رہائش گاہ سے گرفتار کر کے بذریعہ موٹر وے اسلام آباد لایا گیا تھا جہاں طبی معائنے کے بعد انہیں اٹک جیل منتقل کیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں