توہینِ قرآن اور رسالتﷺ کے مجرموں کو پاکستانی عدالت سے موت وقید کی سزائیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

توہین قرآن اور توہین رسالت کے کیس میں عدالت نے مجرموں کو موت اور قید کی سزائیں سنا دیں۔

ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج احسن محمود ملک نے توہین قرآن اور توہین رسالت کے کیس میں بڑا فیصلہ سناتے ہوئے چار مجرموں کو سزائے موت، عمر قید اور سات ، سات سال قید کی سزائیں سنا دیں۔ مجرموں میں وزیر گل،محمد امین، فیضان اور محمد رضوان شامل ہیں، جن پر شان رسالتﷺ میں گستاخی ثابت ہوئی۔ مجرموں نے قرآن پاک کی بھی توہین و بے حرمتی کی اور اس حوالے سے سوشل میڈیا پو پوسٹ شیئر کیں۔

عدالت نے اپنے فیصلے میں حکم دیا کہ مجرموں کو اس وقت تک پھانسی کے پھندے پر لٹکایا جائے جب تک موت واقع نہ ہو جائے۔ عدالت نے پانچویں ملزم عثمان لیاقت کو سات سال قید سخت کی سزا سناتے ہوئے جیل منتقل کرنے کا حکم دیا۔

واضح رہے کہ ایف آئی اے سائبر کرائم ونگ نے 12 ستمبر 2022 کو مقدمہ درج کیا تھا، جس پر عدالت نے قرار دیا کہ توہین رسالتﷺ اور قران پاک کی بے حرمتی جیسے گھناونے جرائم میں رعایت نہیں برتی جا سکتی۔

مقبول خبریں اہم خبریں