ڈھائی سالہ بچہ والدین قتل ہونے پر لاشوں کے درمیان ہاتھ میں فیڈر تھامے لاوارث رہ گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

وفاقی دارلحکومت اسلام آباد کے تھانہ سبزی منڈی کے علاقے میں میاں بیوی کو رشتے داروں نے فائرنگ کر کے قتل کر دیا اور اس دوران ڈھائی سال کے بچے کو لاشوں کے درمیان ہاتھ میں فیڈر لیے ٹہلتے دیکھنے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئی۔

دلخراش مناظر والی اس ویڈیو کو سنیچر کی سہ پہر ٹوئٹر پر پوسٹ کیا گیا جس کے بعد صارفین کی بڑی تعداد دل گرفتہ نظر آئی۔

سینکڑوں صارفین نے ملکی حالات پر تبصرہ کرتے ہوئے اس واقعہ کو گزشتہ ہفتے سوات کے بازار میں قتل کی گئی خاتون کی اُس دلخراش تصویر سے ملایا جس میں معصوم بیٹا ماں کی لاش سے لپٹ کر رو رہا ہے۔

اسلام آباد پولیس کے مطابق دوہرے قتل کا یہ واقعہ سیکٹر آئی الیون میں مشہور کیش اینڈ کیری سُپر سٹور کی پارکنگ کے قریب گراؤنڈ میں پیش آیا۔

پولیس کے بیان میں کہا گیا کہ مقتولین میاں بیوی تھے جن کے لاوارث رہ جانے والے بچے کو اُن کے لواحقین کے حوالے کر دیا گیا ہے۔
مقتولین کی لاشیں پوسٹ مارٹم کے لیے پمز ہسپتال منتقل کی گئی ہیں۔

پولیس کے مطابق مقتولین کی شناخت ریحانہ سردار اور ظفر اقبال کے نام سے ہوئی۔ جن کو ذاتی جائیداد کے تنازعے پر ان کے رشتہ داروں نے قتل کیا۔

پولیس نے بتایا کہ ملزمان کی شناخت ہو چکی ہے جن کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جا رہے ہیں۔

مقتول میاں بیوی راولپنڈی کے علاقے پیر ودھائی کے رہائشی تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں