مستونگ: رہنما جے یو آئی حافظ حمد اللہ گاڑی کے قریب دھماکے میں 11 ساتھیوں سمیت زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

بلوچستان کے ضلع مستونگ میں جمعرات کو ایک گاڑی کے قریب دھماکے کے نتیجے میں جمیعت علمائے اسلام (جے یو آئی) کے مرکزی رہنما حافظ حمد اللہ سمیت 11 افراد زخمی ہو گئے۔

ترجمان جے یو آئی اسلم غوری کے میڈیا کو دیے گئے بیان کے مطابق ’’حافظ حمد اللہ ایک جلسے میں شرکت کے لیے جا رہے تھے کہ ان کے قافلے کے قریب دھماکہ ہوا۔‘‘

انہوں نے کہا کہ حافظ حمداللہ کوئٹہ سے قلات کی طرف جا رہے تھے اور مستونگ کراس کرنے کے بعد یہ واقع پیش آیا لیکن تاحال یہ معلوم نہیں ہو سکا کہ یہ خودکش دھماکا تھا یا یہ کوئی پلانٹڈ بم تھا۔

انہوں نے مزید بتایا کہ حافظ حمد اللہ کی حالت خطرے سے باہر ہے اور انہیں زخمی حالت میں کوئٹہ کے ہسپتال منتقل کیا جا رہا ہے۔

اس واقعے میں حافظ حمد اللہ سمیت 11 افراد زخمی ہوئے، جن میں ان کے دو گن میں اور ڈرائیور شامل ہیں، جبکہ دھماکے سے قریب سے گزرنے والی ایک کوسٹر بھی زد میں آئی، جس میں کچھ افراد زخمی ہوئے، جنہیں نواب غوث بخش ہسپتال مستونگ مسنتقل کر دیا گیا ہے۔

محکمہ صحت بلوچستان کے مطابق دھماکے کے 11 زخمی نواب غوث بخش رٸیسانی ہسپتال مستونگ لائے گٸے، جنہیں طبی امداد کے بعد کوٸٹہ ٹراما سینٹر ریفر کر دیا گیا، جن میں سے ایک زخمی کی حالت تشویش ناک ہے۔

بلوچستان کے نگران وزیر اعلیٰ علی مردان خان ڈومکی نے مستونگ دھماکے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے واقعے کی رپورٹ طلب کر لی اور حکام کو ہدایت کی کہ ملوث عناصر کی گرفتاری کے لیے تمام دستیاب وسائل بروئے کار لائے جائیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں