نیب ترامیم کی کئی شقیں کالعدم قرار، سپریم کورٹ کا درج مقدمات بحال کرنے کا حکم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

پاکستان کی عدالت عظمیٰ سپریم کورٹ آف پاکستان نے نیب ترامیم کے خلاف چئیرمین پاکستان تحریک انصاف [پی ٹی آئی] کی درخواست کو قابل سماعت قرار دیتے ہوئے متعدد شقیں کالعدم قرار دے دی۔

چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں قائم سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے محفوظ کیا گیا فیصلہ جاری کرتے ہوئے دو ایک کی اکثریت کا فیصلہ سنایا۔

عدالت نے نیب کی تمام تحقیقات اور مقدمات بحال کرنے کا حکم دیتے ہوئے 50 کروڑ کی حد سے کم ہونے پر ختم ہونے والے تمام مقدمات بھی بحال کر دیے۔

چیف جسٹس پاکستان نے فیصلہ پڑھ کر سناتے ہوئے عوامی عہدوں پر بیٹھے تمام افراد کے مقدمات بحال کر دیے اور کہا کہ نیب ترامیم کے خلاف درخواست قابل سماعت قرار دی جاتی ہے۔

اس سے قبل توشہ خانہ ریفرنس میں سابق وزرائے اعظم نواز شریف، یوسف رضا گیلانی اور سابق صدر آصف زرداری کے خلاف قائم کیس واپس لے لئے گئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں