شیخ رشید احمد کو راولپنڈی سے گرفتار کر لیا گیا: بھتیجے اور وکیل کی تصدیق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

عوامی مسلم لیگ کے سربراہ اور سابق وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد کو راولپنڈی کی نجی ہاؤسنگ سوسائٹی سے گرفتار کر کے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا گیا۔

شیخ رشید کے وکیل ایڈووکیٹ سردار عبدالرازق خان نے گرفتاری کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ شیخ رشید کو نجی ہاؤسنگ سوسائٹی میں واقع ان کے گھر سے سول کپڑوں میں ملبوس لوگ گرفتار کرکے لے گئے۔

انہوں نے بتایا کہ پولیس نے شیخ رشید کے بھتیجے شیخ شاکر اور ملازم عمران کو بھی گرفتار کر لیا گیا ہے اور انہیں گرفتاری کے بعد نامعلوم مقام پر منتقل کردیا گیا ہے۔

شیخ رشید کے بھتیجے اور سابق رکن قومی اسمبلی شیخ راشد شفیق نے اس حوالے سے اپنے ویڈیو پیغام میں کہا کہ ابھی مغرب کی نماز کے بعد شیخ رشید احمد کو راولپنڈی میں واقع بحریہ ٹاؤن فیز تھری سے پنجاب پولیس نے گرفتار کیا ہے اور گرفتار کرنے کے بعد یہ نہیں پتا کہ وہ اس وقت کہاں پر ہیں۔

انہوں نے کہا کہ شیخ رشید کے ساتھ ساتھ میرے بڑے بھائی شیخ شاکر اور ہمارے ایک ملازم شیخ عمران کو گرفتار کر کے نامعلوم مقام پر لے گئے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ پنجاب پولیس نے لاہور ہائی کورٹ میں لکھ کر دیا ہوا ہے کہ شیخ رشید ہمیں کسی کیس میں مطلوب نہیں ہیں، اسلام آباد ہائی کورٹ میں اسلام آباد پولیس نے لکھ کر دیا ہوا ہے کہ وہ ہمیں کسی کیس میں مطلوب نہیں ہیں اور پہلے دن سے نو مئی کے واقعات کی مذمت کی ہے۔

شیخ راشد شفیق نے کہا کہ حالات و واقعات کے تناظر میں اعلیٰ اداروں، ہائی کورٹ اور سپریم کورٹ سے اپیل کرتا ہوں کہ ہمیں بتایا جائے کہ یہ تینوں گرفتار افراد کہاں پر ہیں، اگر وہ کسی مقدمے میں مطلوب ہیں تو انہیں تھانے اور عدالت میں پیش کیا جائے، ہم قانونی جنگ لڑیں گے اور اپنے حق کے لیے کھڑے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ میں تمام اداروں سے کہنا چاہتا ہوں کہ شیخ رشید ایک سینئر سیاستدان ہیں اور انہیں اس طریقے سے نہیں اٹھایا جا سکتا، ان پر کوئی ایف آئی آر نہیں ہے تو ہمیں فوری طور پر بتایا جائے کہ وہ کس تھانے میں ہیں اور انہیں کس مقدمے میں گرفتار کیا گیا ہے۔

سابق رکن اسمبلی نے خبردار کیا کہ اگر شیخ رشید کی جان کو کسی قسم کا نقصان پہنچا تو موجودہ پنجاب حکومت اور وفاقی حکومت اس کی ذمہ دار ہو گی۔

پاکستان تحریک انصاف نے بھی اپنے سوشل میڈیا اکاؤنٹ پر شیخ رشید کی گرفتاری کی تصدیق کی ہے۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ایکس (سابقہ ٹوئٹر) پر اپنے پیغام میں کہا کہ شیخ رشید کی گرفتاری کے ساتھ سیاسی انتقام اور فسطائیت کا سلسلہ جاری ہے، یہ پاکستان میں قانون کا مذاق اڑانے کی ایک اور مثال ہے، نگران حکومت کے باوجود فاشزم اور انسانی حقوق کی کھلم کھلا خلاف ورزی جاری ہے۔

عوامی مسلم لیگ کے سربراہ اور پی ٹی آئی چیئرمین کے اتحادی شیخ رشید احمد 9 مئی کے واقعات کے بعد سے عوامی منظر نامے سے غائب تھے۔

ان کی گرفتاری ایک ایسے موقع پر عمل میں آئی ہے جب ملک بھر میں 9 مئی کے واقعات کے سلسلے میں پی ٹی آئی اور اس کے حامیوں کے خلاف ریاستی کریک ڈاؤن جاری ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں