پاکستان اور سعودی عرب ویکسین تیاری کی ٹیکنالوجی کی منتقلی پر کام کرنے کے خواہاں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب اور پاکستان کے وزرائے صحت نے انسانی صحت کی دیکھ بھال کے شعبے میں دوطرفہ تعاون کو بڑھانے پر اتفاق کرتے ہوئے ویکسین کی تیاری کے لیے ٹیکنالوجی کی منتقلی پر مل کر کام کرنے کے عزم کا اظہار کیاہے۔

یہ اعلان گذشتہ روز قاہرہ میں عالمی ادارہ صحت کی علاقائی کمیٹی کے 70ویں اجلاس کے موقع پر پاکستان کے وزیر صحت ڈاکٹر ندیم جان کی اپنے سعودی ہم منصب فہد بن عبدالرحمن الجلاجیل سے ملاقات کے بعد سامنے آیا۔

ملاقات کے بعد پاکستان کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ دونوں ممالک کی وزارت صحت ویکسین کی تیاری میں ٹیکنالوجی کی منتقلی پرمل کر کام کریں گی۔بیان میں مزید کہا کہ وزراء صحت کے ماہرین کی ایک ٹیم اس حوالے سے جلد مہارت کے تبادلے پر اتفاق پیدا کرنے کے بعد ٹیکنالوجی کی منتقلی کے لیے تجاویز کی تیاری اور مفاہمت کی یادداشت کو حتمی شکل دیں گی۔

ملاقات میں دونوں ممالک کے درمیان نرسنگ اور پیرا میڈیکس کے شعبے میں تکنیکی معاونت پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا اور فیصلہ کیا گیا کہ سفارشات اور معاہدوں کو حتمی شکل دینے کے لیے سعودی وفد پاکستان کا دورہ کرے گا۔

ڈاکٹر ندیم جان نے سعودی وزیر کو قومی سطح ہر ادویات کی تیاری بڑھانے کے منصوبے فارما پاک سے آگاہ کیا۔ الجلاجیل نے اس منصوبے کے لیے اپنے مکمل تعاون کی پیشکش کی۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ریاض 1-2 دسمبر کو جنوبی ایشیائی ملک کی پہلی عالمی صحت سلامتی سربراہی اجلاس کے انعقاد کے منصوبے میں پاکستان کی حمایت کرے گا۔

پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان ہمیشہ قریبی دفاعی اور سفارتی تعلقات رہے ہیں اور حالیہ برسوں میں دونوں نے اپنے تعاون کو وسیع اور گہرا کرنے اور تعلقات میں مزید تزویراتی گہریائی پیدا کرنے کی کوشش کی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں