پاکستان اوریواےای کا ڈیجیٹل معیشت اوروینچر کیپیٹل سرمایہ کاری میں تعاون پرتبادلہ خیال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان کے نگراں وزیر برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی (آئی ٹی) عمر سیف نے پیر کو کہا کہ انہوں نے متحدہ عرب امارات (یو اے ای) کے مصنوعی ذہانت (اے آئی) اور ڈیجیٹل معیشت کے وزیر عمر بن سلطان العلماء سے ملاقات کی اور ان سے اے آئی، ڈیجیٹل معیشت اور وینچر کیپیٹل کی سرمایہ کاری میں دو طرفہ تعاون پر تبادلۂ خیال کیا ہے۔

یہ ملاقات سیف کے یو اے ای کے دورے کے دوران ہوئی جہاں انہوں نے 16 سے 20 اکتوبر تک دبئی ورلڈ ٹریڈ سینٹر میں منعقدہ جی آئی ٹی ای ایکس (گلف انفارمیشن ٹیکنالوجی ایگزیبیشن) گلوبل ٹیک اینڈ اسٹارٹ اپ شو کے 43 ویں ایڈیشن میں بھی شرکت کی۔

سیف نے متحدہ عرب امارات کے وزیر سے اپنی ملاقات کو "حیرت انگیز" قرار دیا۔

پاکستانی وزیر برائے آئی ٹی نے ایکس پلیٹ فارم پر کہا۔ "انہوں نے پاکستان میں اے آئی، ڈیجیٹل معیشت اور وینچر کیپیٹل کی سرمایہ کاری میں تعاون کرنے میں گہری دلچسپی کا اظہار کیا اور ایک باضابطہ ایم او یو (مفاہمت کی یادداشت) پر دستخط کرنے کی تجویز پیش کی۔"

وزیر کے مطابق پاکستان کا لاؤنج سب سے بڑے نمائشی لاؤنجز میں سے ایک ہے جسے دنیا کی سب سے بڑی آئی ٹی نمائش کہا جاتا ہے۔

سیف نے ایکس پلیٹ فارم پر ایک اور پوسٹ میں کہا، "ہمارے پاس 27 کمپنیاں اور 45 سے زیادہ اسٹارٹ اپس ہیں۔ ہمارا برانڈ ٹیک ڈیسٹی نیشن پاکستان کے ان سب سے بڑے برانڈز میں سے ایک ہے جو جی آئی ٹی ای ایکس میں نمایاں نظر آتا ہے اور پاکستان کی آئی ٹی انڈسٹری کے حوالے سے گفتگو بہت پرجوش ہے۔"

پاکستان اور متحدہ عرب امارات کے درمیان دفاع، صحت، تجارت، ثقافت اور اطلاعات سمیت مختلف شعبوں میں قریبی تعاون ہے۔ 1.6 ملین سے زائد پاکستانی خلیجی ملک میں مقیم ہیں اور سرکاری اور نجی شعبوں میں کام کرتے ہیں۔

ہر سال وہ پاکستان کو 4 بلین ڈالر سے زیادہ ترسیلاتِ زر بھیجتے ہیں۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق متحدہ عرب امارات میں مقیم پاکستانیوں نے 2022 میں 5.10 بلین ڈالر کی خطیر ترسیلات بھیجیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں