نگران وزیر اعظم انوار الحق کاکڑ کا غزہ میں فوری سیز فائر کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

نگران وزیر اعظم انوار الحق کاکڑ نے کہا کہ انہوں نے واضح طور پر اسرائیل-فلسطین معاملے پر مغربی سفیروں کو پاکستان کے جذبات سے آگاہ کیا اور ان سے مطالبہ کیا کہ وہ غزہ میں اسرائیلی جارحیت کی حوصلہ شکنی کریں۔

منگل کو میو ہسپتال لاہور کے دورے کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کے دوران فلسطین پر اسرائیلی مظالم کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں وزیر اعظم نے کہا کہ پاکستان نے سعودی عرب کے ساتھ مل کر او آئی سی کے حالیہ ہنگامی اجلاس کی مشترکہ میزبانی کی۔ غزہ پر او آئی سی اجلاس میں پاکستانی وزیر خارجہ نے بھرپور نمائندگی کی ہے۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ ہمارا ماننا ہے کہ حالیہ کشیدگی میں فوری طور پر جنگ بندی ہونی چاہیے اور انسانی ہمدردی کی بنیاد پر راہداریاں کھلنی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ ان کو آنے والے دنوں، ہفتوں یا مہنیوں میں اس بحران کا حل نظر نہیں آرہا کیونکہ یہ مسئلہ ’دائمی‘ ہے، تاہم وہ اس بات پر برقرار رہے کہ اسرائیل کی ’نامناسب جارحیت‘ کی وجوہات موجود ہیں۔

انہوں نے کہا کہ انہوں نے مختلف عالمی رہنمائوں، چینی قیادت اور عالمی میڈیا کے ساتھ اپنے حالیہ رابطوں کے دوران اس مسئلے کو اجاگر کیا اور پاکستان کی حکومت اور قوم کا موقف اور جذبات کو دو ٹوک انداز میں ان تک پہنچایا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اسرائیلی جارحیت کی سخت مذمت کرتا ہے، ہم نے ہر محاذ پر فلسطین کے لیے آواز بلند کی ہے، چین کے حالیہ دورے میں بین الاقوامی رہنمائوں سے بھی اس تنازعہ کے حوالے سے تفصیلی بات چیت ہوئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں