فلسطین پر اوآئی سی سربراہی اجلاس، وزیر اعظم شرکت کے لیے سعودی عرب روانہ

غزہ میں بچوں کے قاتل فرعون کے راستے پر چل رہے ہیں: وزیر اعظم کاکڑ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

پاکستان کے نگران وزیراعظم انوار الحق کاکڑ جمعے کو سعودی عرب کے تین روزہ سرکاری دورے پر اسلام آباد سے ریاض روانہ ہوئے جہاں وہ فلسطین میں حالیہ صورت حال پر منعقدہ اسلامی تعاون تنظیم ’او آئی سیُ کے سربراہی اجلاس میں شرکت کریں گے۔

وزیراعظم کے دفتر سے جاری بیان کے مطابق انوار الحق کاکڑ اس دورے کے دورن سربراہ اجلاس میں شریک مختلف ممالک کے سربراہان سے ملاقاتیں بھی کریں گے۔

اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کے مطابق 12 نومبر کو ریاض میں ہونے والے سربراہ اجلاس میں فلسطینی عوام کے خلاف اسرائیلی جارحیت پر تبادلہ خیال کیا جائے گا۔

غزہ پر اسرائیلی حملے سات اکتوبر سے جاری ہیں اور فلسطینی محکمہ صحت کے مطابق ان حملوں میں اموات کی تعداد 10 ہزار سے تجاوز کر گئی ہے جن میں چار ہزار سے زائد بچے ہیں۔

قبل ازیں جمعرات کو فلسطین میں جاری اسرائیلی جارحیت کی شدید مذمت کرتے ہوئے وزیر اعظم انوار الحق کاکڑ نے کہا کہ غزہ میں بچوں کے قاتل کی مثال ماضی میں فرعون کے اقدامات سے مماثلت رکھتی ہے اور اسرائیل اسی راستے پر چل رہا ہے۔

اقتصادی تعاون تنظیم (ای سی او) کے 16ویں اجلاس سے خطاب میں وزیر اعظم نے ممبر ممالک پر زور دیا کہ وہ اسرائیل کو غزہ میں جاری جارحیت پر جوابدہ بنائیں۔



اپنے خطاب میں انہوں نے غزہ کے مسئلے پر تفصیل سے بات کی اور غزہ میں امداد پر زور دیتے ہوئے اسرائیل کی طرف سے شہریوں خاص طور پر بچوں اور ہسپتالوں پر حملوں کی سخت مذمت کی۔

’بچوں کو ختم کرنے پر مجھے ماضی سے یہ وہ واقعہ یاد آتا ہے جس میں فرعون نے حضرت موسیٰ کی پیدائش پر بچوں کو مارا تھا۔ اور
اب افسوسناک طور پر جو موسیٰ کے پیروکار ہونے کے دعوے دار ہیں وہ اب فرعون کے راستے پر چل رہے ہیں۔‘

غزہ پر اسرائیلی حملے سات اکتوبر سے جاری ہیں اور فلسطینی محکمہ صحت کے مطابق ان حملوں میں اموات کی تعداد 10 ہزار سے تجاوز کر گئی ہے جن میں چار ہزار سے زائد بچے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں